’ ہم یہاں سے اٹھ کر نہیں جائیں گے چاہے رات کے 12 بج جائیں ‘ چیف جسٹس نے ایسی بات کہہ دی کہ حکومت کے ہوش اڑا دیے

’ ہم یہاں سے اٹھ کر نہیں جائیں گے چاہے رات کے 12 بج جائیں ‘ چیف جسٹس نے ایسی ...
’ ہم یہاں سے اٹھ کر نہیں جائیں گے چاہے رات کے 12 بج جائیں ‘ چیف جسٹس نے ایسی بات کہہ دی کہ حکومت کے ہوش اڑا دیے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے کراچی میں سمندری آلودگی کے کیس میں اپنے ریمارکس میں کہا ہے کہ معاملہ انسانی زندگیوں کا ہے، یہاں سے اٹھ کر نہیں جائیں گے، رات12 بجے تک بھی کیس کی سماعت کرنا پڑی توکریں گے۔

پریم کورٹ کراچی رجسٹری میں سمندری آلودگی سے متعلق کیس کی سماعت جاری ہے، چیف جسٹس آف پاکستان کی سربراہی میں 5 رکنی بنچ کیس کی سماعت کر رہا ہے۔ دورانِ سماعت چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں کہا صاف پانی فراہم کرنا سندھ حکومت کی ذمہ داری ہے لیکن شہریوں کو گندا پانی مہیا کیا جا رہا ہے، پنجاب میں بھی اس معاملے کو اٹھایا ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں : بل گیٹس کی وہ ایک عادت جس نے اسے دنیا کا امیر ترین آدمی بنا دیا

انہوں نے ایڈووکیٹ جنرل سندھ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ یہ کام تو آپ اور آپ کی حکومت کو کرنا چاہیے تھا، حکومت پر واضح کرنا چاہتے ہیں کہ ہمارے پاس توہین عدالت کا اختیار بھی موجود ہے، معاملہ انسانی زندگیوں کا ہے ہم یہاں سے اٹھ کر نہیں جانے والے رات12 بجے تک بھی سماعت کرنا پڑی توکریں گے۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /سندھ /کراچی