پاکستان میں بہت سے سرمایہ کاری کا مواقع موجود ہیں، ماحول سرمایہ کاری کے موافق ہے: سعودی سرمایہ کار

پاکستان میں بہت سے سرمایہ کاری کا مواقع موجود ہیں، ماحول سرمایہ کاری کے ...
پاکستان میں بہت سے سرمایہ کاری کا مواقع موجود ہیں، ماحول سرمایہ کاری کے موافق ہے: سعودی سرمایہ کار

جدہ (محمد اکرم اسد) پاکستان معیشت کے ہر شعبے میں سرمایہ کاری کے مواقع سے بھرپور ملک ہے اور سعودی سرمایہ کاروں کو ان مواقع کا فائدہ اٹھانا چاہۓ. پاکستان نے سرمایہ کاری کے دوستانہ ماحول کو فروغ دیا ہے جو مستقبل میں مزید سرمایہ کاروں کو اپنی طرف متوجہ کرے گا. یہ بات سعودی سرمایہ کاروں نے یہاں ایک مقامی ہوٹل میں ہونے والی ایک میڈیا سے ملاقات میں کہا. جدہ میں پاکستانی قونصل خانے نے سعودی سرمایہ کاروں کا ذرائع ابلاغ کے ساتھ ایک گفتگو کے سلسلے کا اہتمام کیا تھا۔ سعودی سرمایہ کاروں نے مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کے مواقع تلاش کرنے کے لئے گزشتہ مہینے پاکستان کا دورہ کیا. سیشن کا مقصد یہ تھا کہ یہ معروف سعودی سرمایہ کار، قونصل خانے کے حکام اور ذرائع ابلاغ کے نمائندوں ساتھ اپنے تجربے کا اشتراک کریں۔

اس تقریب میں پاکستان جانے والے سعودی وفد اور پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے نمائند گان اور پاکستانی قونصل خانے کے حکام نے شرکت کی۔.

سعودی وفد کے ارکان میں جناب طلال ال سعیری اور عبدالجبار شامل تھے جنکا تعلق سی جی ایم کمپنی سے ہے۔ یہ کمپنی ایک سعودی چینی-پاکستان کنسورشیمیم ہے جوکہ پاکستان کے پن بجلی کے منصوبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی رکھتی ہے۔ڈاکٹر حماد ندوی ایم ایس مستقبل کے سربراہ پاکستان کے تعلیمی سیکٹرسرمایہ کاری میں دلچسپی رکھتے ہیں۔عبداللہ الظاہرانی اور حسین ال کاملی بھی انفرا سٹرکچر اور کان کنی کے شعبہ جات میں سرمایہ کاری کے خواہش مند ہیں۔

عبدالجبار نے کہا کہ انھوں نے پاکستان کے دورہ میں ایک پن بجلی کے پروجیکٹ کی بولی کے عمل میں حصہ لینے کو حتمی شکل دی، انہوں نے کہا کہ، وہ پاکستان میں انفراسٹرکچر اور کان کنی کے سیکٹر منصوبوں میں بھی حصہ لینے جا رہے ہیں .ڈاکٹر حماد ندوی نے بتایا ان کی کمپنی نے پاکستان میں تعلیمی شعبے میں سرمایہ کاری کا فیصلہ کیا ہے. انہوں نے بتایا کہ ہم ایک پاکستانی کمپنی کے ساتھ جوائنٹ وینچر میں آگے بڑھنے کی منصوبہ بندی کررہے ہیں۔عبد اللہ الظاہرانی نے کہا کہ ان کا دورہ بہت ہی شاندار ثابت ہوا. انہوں نے جنوبی پنجاب کو ایک ممکنہ سرمایہ کاری مارکیٹ کے طور پر دیکھا اور کہا کہ انہوں نے جنوبی پنجاب میں انفراسٹرکچر اور کان کنی کے منصوبوں میں پاکستان میں ایک کمپنی کے ساتھ اشتراک کا فیصلہ کیا ہے۔

زمانہ الاسلام ٹریڈنگ کے حسین ال کاملی نے کہا کہ ان کا اپنا تجربہ پاکستان کے بہت خوشگواررہا۔ پاکستان کی اقتصادی صورتحال سے ظاہر ہوتا ہے کہ آج پاکستان تجارت اور سرمایہ کاری کے لئے ایک جنت ہے جیسا کہ موجودہ مالی سال پاکستان میں تقریبا 6٪ کی متوقع جی ڈی پی کی شرح معیشت کا بہت صحت مند تصور فراہم کرتی ہے. انہوں نے کہا کہ پاکستان کا ایک دورہ پاکستان کے بارے میں تمام غلط فہمیاں دور کر دے گا۔ ، یہ پاکستان کے بارے میں نقطہ نظر کو مکمل طور پر تبدیل کردے گی. انہوں نے کہا کہ ان کی کمپنی پاکستان کے سیاحت کے شعبہ میں سرمایہ کاری کرنا چاہتی ہے۔

وفد کے تمام ارکان کےخیالات پاکستان میں ان کی سرمایہ کاری کے منصوبوں کے بارے میں بہت مثبت تھے اورانھوں نے دیگر سعودی کاروباری اداروں کو بھی پاکستان کو بہترین تجارتی اور سرمایہ کار پارٹنر کے طور پر دیکھنے کی حوصلہ افزائی کی. سعودی عرب کے معروف تاجروں نے کراچی میں ایکسپو پاکستان 2017 نمائش کے دوران پاکستان کا دورہ کیا. کراچی کا دورہ کرنے کے علاوہ، سرمایہ کاری کے مواقع کو تلاش میں کمپنیوں نے لاہور کا بھی دورہ کیا اور پاکستان کے عوامی اور نجی شعبے کے ساتھ ملاقاتوں کا سلسلہ شروع کیا اور پاکستان کے بارے میں بہت مثبت تاثرات لے کر واپس آ ئے۔

اپنے بریفنگ میں شہزاد احمد کمرشل قونصلر نے کہا کہ پاکستان اور سعودی عرب "سعودی ویژن 2030" اور "پاکستان ویژن 2025" کے درمیان مشترکات کے ذریعے دو طرفہ تجارتی حجم کو بڑھانے کے لئے مشترکہ کوششیں کر رہی ہیں. چین-پاکستان اقتصادی راہداری اور اس کے معاشی مواقع بھی پاک سعودی اقتصادی ومعاشی ترقی میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں. انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان کے اگلے سال کے شروع میں پاکستان سرمایہ کاری فورم کو منعقد کرنے کا ارادہ رکھتی ہے تاکہ دونوں ممالک کے درمیان باہمی تعاون کے ساتھ سماجی اور اقتصادی ترقی کا سفرمزید تیز تر ہو ۔ انہوں نے کہا سعودی ویژن 2030 اور پاکستانی ویژن 2025 پاک سعودی دوطرفہ اقتصادی تعلقات کو ایک دوسرے کی خوشحالی کا ضامن بنائیں گے.

مزید : عرب دنیا /بزنس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...