پاک امریکا تعلقات پڑوسی ممالک کے تعاون کے بغیر کچھ ممکن نہیں :حنا ربانی کھر

پاک امریکا تعلقات پڑوسی ممالک کے تعاون کے بغیر کچھ ممکن نہیں :حنا ربانی کھر
پاک امریکا تعلقات پڑوسی ممالک کے تعاون کے بغیر کچھ ممکن نہیں :حنا ربانی کھر

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد (این این آئی)پاکستان کی سابق وزیر خارجہ حنا ربانی کھر نے افغانستان اور جنوبی ایشیاء کیلئے نئی امریکی پالیسی کی وجہ سے پاکستان پر ممکنہ اثرات کے حوالے سے بات کر تے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ حالات میں پڑوسی ممالک کے ساتھ اتحاد قائم کرنا اولین ضرورت ہے تاکہ آئندہ کے خطرات اور چیلنج کا سامنا کیا جاسکے۔

لائیو ٹی وی دیکھنے کے لئے اس لنک پر کلک کریں

تفصیلات کے مطابق ایک انٹرویومیں حنا ربانی کھر کا کہناتھا کہ وقت بدل چکا ہے تاہم اب ہمیں اس خواہش کو بھول جانا چاہیے کہ امریکا کے ساتھ اچھے تعلقات پاکستان کی بقاء اور سلامتی ہیں۔ امریکا کا مفاد اب پاکستان کے بجائے بھارت اور چین میں ہے لہٰذا ہمیں اس کے ساتھ آئندہ اچھے تعلقات کی امید رکھنا ہمارے لیے بے معنی ہوگا۔انہوں نے کہاکہ ایسا ماضی کے 70 سالوں میں کبھی نہیں ہوا کہ ہم پڑوسی ممالک کی مدد کے بغیر امریکا کے ساتھ معاملات کو درست کرسکے ہوں، میں یقین سے کہتی ہوں کہ آئندہ 70 سالوں میں بھی تنہا ہم اپنی بات کبھی نہیں منوا پائیں گے۔ بدقسمتی سے پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے ایک ایسی خارجہ پالیسی کو اپنایا جس سے بھارت ہی نہیں، بلکہ افغانستان اور ایران کے ساتھ بھی حالات پھر سے کشیدگی کی جانب چلے گئے۔

سابق وزیر خارجہ نے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے کے امریکی فیصلے پر بات کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے اقدامات سے امریکا خود ہی دنیا میں اپنی اہمیت کو ختم کررہا ہے۔ جس طرح سے قوامِ متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اس امریکی فیصلے کے خلاف ووٹ ڈالے گئے، اس سے یہ بات واضح ہوگئی کہ ٹرمپ انتظامیہ نے امریکا کو دنیا میں تنہا کردیا کیونکہ اس معاملے پر وہ دھمکیاں بھی کام نہ آسکیں جو وہ کئی ممالک کو دے چکے ہیں۔

مزید : قومی