جنوبی پنجاب میں غربت پسماندگی و ڈیرے ذمہ دار سینیٹر سراج الحق

جنوبی پنجاب میں غربت پسماندگی و ڈیرے ذمہ دار سینیٹر سراج الحق

ملتان،ڈیرہ ( سٹی رپورٹر،بیورو رپورٹ) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی بہاولپور صوبے کی بحالی اور جنوبی پنجاب کے قیام اور اس خطے کی پسماندگی، غربت کے خاتمے، کسانوں کے مسائل کے حل کیلئے تحریک چلائے گی ہر فورم پر اس کیلئے آواز اُٹھا ئی جائے گی۔ جماعت اسلامی نے پنجاب کو تنظیمی طور پر دستور کے مطابق تین حصوں جنوبی پنجاب، شمالی پنجاب اور وسطی پنجاب میں تقسیم کیا ہے۔ بلدیاتی انتخابات میں (بقیہ نمبر17صفحہ12پر )

بھر پور حصہ لیا جائے تنظیم کو گاؤں اور محلے کی سطح تک قائم کیاجائے گا۔ اس خطے کی پسماندگی اور غربت کے ذمہ دار یہاں کے جاگیر، وڈیرے اور سرمایہ دار ہیں جو غریبوں کے ووٹوں سے اسمبلیوں میں پہنچتے ہیں اپنی دولت میں اور غریبوں ، مسکینوں ، مظلوموں کے مسائل میں اضافہ کرتے ہیں شریف اور دیانت دار لوگوں کیلئے جماعت اسلامی کے دروازے کھلے ہیں ۔ان خیا لات کا اظہار جماعت اسلامی جنوبی پنجاب کے صوبائی سیکر ٹریٹ میں صوبائی ذمہ داران کے ایک اہم اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا جس کی صدارت صوبائی امیر ڈاکٹر سید وسیم اختر نے کی جبکہ جماعت اسلامی پاکستان کے سیکر ٹری جنرل لیاقت بلوچ نے خصوصی شرکت کی۔اجلاس میں جنوری 2019ء میں ہونیوالے جنوبی پنجاب کے وررکز کنونشن کی تیاریوں کا جائزہ بھی لیا گیا۔اجلاس میں تنظیمی اور سیاسی امور کا جائزہ لیا گیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ احتساب وقت کی ضرورت ہے یہ کڑا اور بلا امتیاز ہونا چاہئے اگر صحیح معنوں میں احتساب ہوجائے تو ایوان خالی اور جیلیں بھر جائیں گی ۔ احتساب کے ادارے خاص طور پر نیب کام کم شور زیادہ کرتا ہے اب تک نیب پر جتنا خرچ کیا گیا ہے اتناوصول نہیں ہوا ۔ پانا مہ لیکس میں شامل 436 کرپٹ لوگوں کے خلاف کاروائی نہیں کی جارہی۔انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس کا کام انصاف فراہم کرنا ہے مگر حکمرانوں کی نا اہلی کی وجہ سے چیف جسٹس آف پاکستان وہ کام بھی کررہے ہیں جو حکومت کو کرنا چاہئے ۔ تعلیمی ادارے ہوں یا ہسپتال کی اصلاح کیلئے کام کررہے ہیں لیکن حکومت تو عوام کو صر ف سبز باغ دکھا رہی ہے۔ اجلاس میں صوبائی سیکر ٹری جنرل راؤ محمد ظفر، صوبائی نائب اُمراء و سابق ایم پی اے چودھری اصغر علی گجر، میاں آصف محمود اخوانی، پروفیسر عطاء محمد جعفری، مولانا محمود بشیر، کنور محمد صدیق، چودھری مسعود احمد، رضا محمد قادری،حماد رشید ضیائی نے شرکت کی۔ادھر جماعت اسلامی پاکستان کے امیرسینٹر سراج الحق نے کہاہے کہ موجودحکومت نے عوام سے جو وعدے کیے وہ غلط ثابت ہوئے ہیں نئی حکومت کے پہلے چارماہ میں تبدیلی صرف قیمتوں میں اضافے کی صورت آئی ہے حکومت کے پاس کوئی ویژن ہے اور نہ ہی کوئی پروگرام ہے جبکہ حکومت ہوم ورک اور پروگرام کے بغیرچلائی جارہی ہے وہ ڈیرہ غازی خان میں جماعت اسلامی پنجاب کے نائب امیرشیخ عثمان فاروق کے چھوٹے بھائی سعد فاروق کی شادی کے موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کررہے تھے اس موقع پر جنرل سیکرٹری لیاقت بلوچ ،نائب امیرراشد نسیم، امیر جنوبی پنجاب ڈاکٹر وسیم اختر ،اظہر اقبال حسن ،میاں مقصود احمد ،چوہدری عزیر لطیف،راؤ محمد ظفر،پروفیسر عطا محمد جعفری،جاوید اقبال بلوچ ،پروفیسر افتخار ہاشمی،ڈاکٹر عرفان اللہ ،ڈاکٹر سید وحید احمد ،ڈاکٹر طاہر چوہدری،یوسف خٹک اور عبدالمجید پٹھان سمیت دیگر بھی موجود تھے انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت مختلف خیال لوگوں کاوہ مجموعہ ہے جنکی کوئی منزل نہیں ہے، سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ اگر تینوں بڑی پارٹیوں نے ایکساتھ مل کر جنوبی پنجاب کوالگ صوبہ بنانے کابل اسمبلی میں لائیں توجماعت اسلامی اسکی مکمل حمایت کریگی ایک سوال کے جواب میں سینٹرسراج الحق کا کہناتھاکہ کوئی بھی بڑا اور چھوٹالیڈر احتساب سے بالاتر نہیں ہے تا ہم اس وقت احتساب نہیں بلکہ پٹاخے چھوڑے جارہے ہیں ۔

سراج الحق

مزید : ملتان صفحہ آخر