مقبرہ جہانگیر اور نور جہاں صبح کی سیر کیلئے بند،شاہدرہ کے مکین سراپا احتجاج

مقبرہ جہانگیر اور نور جہاں صبح کی سیر کیلئے بند،شاہدرہ کے مکین سراپا احتجاج

لاہور(سٹی رپورٹر) شاہدرہ کے رہائشیوں کے لئے مقبرہ جہانگیر اور مقبرو نورصبح کی سیر کیلئے بند کر دیے گئے، بتایا گیا ہے کہ سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے حکم پر حکومت پنجاب نے شاہدرہ کے رہائشیوں کیلئے صبح کی سیر کیلئے مقبرہ جہانگیر اور مقبرہ نور جہاں کو صبح فجر کی نماز کے بعد سے 9 بجے تک اوپن کیا ہوا تھا ، جہاں ہزاروں کی تعداد میں مردو خواتین خصوصا بزرگ شہری صبح کے وقت سیر کیلئے آتے تھے ،نئی حکومت نے آتے ہی مقبرہ جہانگیر اور مقبرہ نور جہاں کا انتظام ٹھیکے پر دیدیا جس پر ٹھیکیدار نے صبح کی سیر کیلئے آنے والوں پر مقبرہ جہانگیر کے دروازے بند کر دئیے ۔ بزرگ شہریوں نے احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان ، وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار اور سیکرٹری اور ڈائریکٹر جنرل آثار قدیمہ سے مطالبہ کیا ہے کہ شاہدرہ کے رہائشیوں کیلئے مقبرہ جہانگیر کے دورازے صبح 9 بجے تک سیر کیلئے کھولے جائیں۔اس سلسلہ میں مقبرہ جہانگیر اور مقبرہ نورجہاں کے انچارج قاضی اشرف سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ ڈائریکٹر جنرل کی طرف سے مقبرہ کا انتظام ٹھیکہ پر دیدیا گیا ہے ہم صورتحال پر بے بس ہیں ، اب ٹھیکیدار ہی اس معاملے پر فیصلہ کرنے کا حتمی اختیار رکھتا ہے۔

مقبرہ ،سیر

مزید : میٹروپولیٹن 1