ٹرانسپورٹ، سٹوریج اور مواصلات کے شعبے کی نموبڑھ گئی

ٹرانسپورٹ، سٹوریج اور مواصلات کے شعبے کی نموبڑھ گئی

  



اسلام آباد (اے پی پی)گذشتہ مالی سال 2019ء کے دوران ٹرانسپورٹ، سٹوریج اور مواصلات کے شعبہ کی شرح ترقی میں مجموعی طور پر 3.3 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کی ”سٹیٹ آف پاکستان اکانومی رپورٹ 2019-2018ء“ کی سالانہ رپورٹ کے مطابق گزشتہ مالی سال میں روڈ ٹرانسپورٹ کی خدمات میں دوگنا اضافہ ہوا ہے اور گذشتہ مالی سال کے دوران شرح نمو 3.9 فیصد تک بڑھ گئی جبکہ مالی سال 2018ء کے دوران شرح نمو 2.0 فیصد رہی تھی۔ ایس بی پی کے مطابق گزشتہ مالی سال کے دوران مواصلات کے ذیلی شعبہ میں شرح ترقی 2.0 فیصد رہی ہے جبکہ مالی سال 2018 کے دوران شعبہ کی شرح نمو  منفی4.1 فیصد رہی تھی اس طرح گذشتہ مالی سال کے دوران مواصلات کے شعبہ کی شرح نمو میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ رپورٹ کے مطابق گذشتہ مالی سال کے دوران فضائی ٹرانسپورٹ کے شعبہ کی شرح نمو میں کوئی ردوبدل نہ ہوا اور ذیلی شعبہ کی شرح ترقی مالی سال 2018ء میں 3.4 فیصد تھی جو مالی سال 2019ء کے دوران بھی 3.4 فیصد ہی رہی ہے۔ واضح رہے کہ گذشتہ مالی سال کے دوران سٹوریج اور مواصلات کے شعبہ کی ویلیو ایڈیشن میں ذیلی شعبے روڈ ٹرانسپورٹ کا حصہ 71.3 فیصد، مواصلات کا حصہ 15.4 فیصد اور فضائی ٹرانسپورٹ کا حصہ 6.3 فیصد رہا ہے۔

جبکہ مجموعی طور پر تینوں ذیلی شعبوں کا حصہ 93 فیصد رہا ہے۔ گذشتہ مالی سال کے دوران روڈ ٹرانسپورٹ کے شعبہ کی شرح ترقی میں اضافہ کے بنیادی اسباب میں چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبہ (سی پیک) کے تحت سڑکوں کی تعمیر کے مختلف منصوبے شامل ہیں اور ان منصوبوں میں سی پیک کے مشرقی روٹ پر 3005 کلو میٹر سڑکوں کی تعمیر کے 17 مختلف شارٹ ٹرم اور مغربی روٹ پر 1799 کلو میڑ سڑکوں کی تعمیر کے کم اور وسط مدت کے 6 مختلف منصوبہ جات شامل ہیں۔ اس کے علاوہ این ایچ اے نے دوران سال ملک میں موٹر ویز کے نیٹ ورک میں اضافہ بھی کیا جس سے شرح نمو کی بڑھوتری میں مدد ملی. رپورٹ کے مطابق مواصلات کے ذیلی شعبہ میں مالی سال 2018ء کے مقابلہ میں مالی سال 2019ء کے دوران نمایاں بہتری ریکارڈ کی گئی ہے تاہم فضائی ٹرانسپورٹ کے شعبہ کی کارکردگی میں کوئی تبدیلی نہیں ہوئی اور شعبہ کی شرح ترقی 3.4 فیصد رہی ہے۔

مزید : کامرس


loading...