پنجاب کے جیل وارڈرز کی ترقی اے سی آرز کی تکمیل سے مشروط

پنجاب کے جیل وارڈرز کی ترقی اے سی آرز کی تکمیل سے مشروط

  



فیصل آباد(کرائم رپورٹر)پنجاب پرزنزانسٹی ٹیوٹ لاہور میں گذشتہ ماہ ہونیوالی پاسنگ آؤٹ پریڈ میں وارڈرز  سے ہیڈ وارڈرز  کے عہدہ پر ترقی پانیوالوں کی ترقی صرف اس بناء پر رکی ہوئی ہے کہ محکمہ جیل خانہ جات کے متعددافسران اور کلرکوں نے بروقت ان کی اے سی آرز مکمل نہیں کیں۔باخبر ذرائع کے مطابق 19جولائی 2019کو پنجاب بھر سے 95کے قریب وارڈرز نے لاہور پی پی ایس ٹی میں چار ماہ کی پروموشن ٹریننگ 19نومبر کو مکمل کر لی اور ان کی پاسنگ آؤٹ پریڈ میں آئی جی جیل خانہ جات مرزا شاہد سلیم بیگ‘ پرنسپل اکبر میکن اور وائس پرنسپل رانا منظور بھی شریک ہوئے تھے اس موقع پر آئی جی جیل خانہ جات نے کہا کہ جلد ہی پروموشن بورڈ کمیٹی تشکیل دی جائیگی جس میں پاسنگ آؤٹ پریڈ میں کامیاب ہونیوالے وارڈرز  کو ترقی دیکر ہیڈ وارڈرز کر دیا جائے گا لیکن اس سے قبل تمام وارڈرز کو اپنی اپنی اے سی آرز مکمل کروانا ہوں گی۔ اور وہ تمام وارڈرز  اپنی اپنی اے سی آرز خود مکمل کروائیں گے جس پر پاسنگ آؤٹ پریڈ مکمل کرنے والے تمام وارڈرز میں مایوسی کا شکارہو گئے۔بعض متاثرہ وارڈرز کا کہنا ہے کہ اے سی آرز مکمل کرنا افسران و کلریکل سٹاف کا کام تھا اب وارڈرز اپنی اے سی آرزخود کیسے مکمل کرائیں۔اے سی آرز کو مکمل کرنے کے لئے وارڈرز کو کم از کم ایک ماہ کی رخصت اور آمدورفت کے اخراجات30سے 40ہزار روپے ذاتی گرہ سے خرچ کرنے پڑیں گے اور محکمہ جیل خانہ جات کو پہلے ہی فورس کی کمی کا سامنا ہے اور اس پر ان کو ایک ماہ کی چھٹی ملنا ناممکن ہے انہی ذرئع کا کہنا ہے کہ جو سپرنٹنڈنٹ اور ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ جیل فیصل آباد میں تعینات رہ چکے ہیں ان میں اب کوئی بہاولنگر‘ملتان‘راولپنڈی‘ گوجرانوالہ‘ ہیڈ کوارٹر لاہور‘ ساہیوال وغیرہ میں تعینات ہیں یا کچھ ریٹائرڈ ہو چکے ہیں جن سے اے سی آرز مکمل کرانا ایک انتہائی مشکل کام ہے اس لئے کہ وہ جس افسر کے پاس بھی جاتے ہیں وہاں کم از کم تین سے چار گھنٹے تک انتظار کرنا پڑتا ہے پھر افسر سے ملاقات ہو پاتی ہے مگر پھر بھی سوفیصد کامیابی نہیں ہوتی ان تمام حالات میں محکمہ جیل خانہ جات کے وارڈرزسخت مشکلات سے دوچار ہیں حالانکہ محکمہ جیل خانہ جات کے افسران کو چاہیے کہ وہ اپنی تعیناتی کے دوران ہی اپنے ماتحت کلریکل سٹاف کو پابند کریں کہ وہ فورس کی اے سی آرز ساتھ ساتھ ہی مکمل کروا لیں جبکہ حالات کے مطابق آئی جی جیل خانہ جات کو چاہیے کہ وہ وارڈزر کی اے سی آرز مکمل کروانے کے لئے متعلقہ سٹاف کو ہدایات جاری کریں تاکہ محکمہ میں ترقی کا عمل مکمل ہو سکے۔

اے سی آرز

مزید : صفحہ آخر