پنجاب بار کونسل کی وکلاء کو آج بھرپور احتجاج، بائیکاٹ یقینی بنانے کی ہدایت

  پنجاب بار کونسل کی وکلاء کو آج بھرپور احتجاج، بائیکاٹ یقینی بنانے کی ہدایت

  



لاہور(آن لائن) پنجاب بار کونسل کے وائس چیئرمین شاہ نواز اسماعیل گجر کی زیر صدارت ہنگامی اجلاس ہوا میں اس امر پر دکھ کا اظہار کیا کہ 48 گھنٹے گزر جانے کے باوجود بھی بے گناہ وکلا کو نہ تو رہا کیا گیا اور نہ ہی مقدمات سے دہشت گردی کی دفعات کو ختم کیا گیا ہے۔پنجاب بار کونسل نے اس کا سخت نوٹس لیتے ہوئے 23دسمبر کو صوبہ بھر کی عدالتوں کے لاک ڈاوؤن کی کال دی ہے۔ ایک پریس ریلیز میں پنجاب بار کونسل نے اپنی جاری پریس ریلز میں ہدایت کی ہے کہ متعلقہ بار کے عہدیدار عدالتوں کے لاک ڈاؤن کو یقینی بنائیں۔ بار میں احتجاج اور علامتی دھرنے بھی دیئے جائیں۔وائس چیئرمین کا کہنا ہے کہ وزیراعلیٰ عثمان بزدار اور وزیر قانون راجہ بشارت نے پی آئی سی معاملہ میں انتہائی قابل اعتراض رویہ اپنایا اور وکالت کے پیشے کی توہین کی۔انہوں نے مزید کہا کہ دونوں نے اپنے سرکاری عہدے سنبھالنے پر اپنے وکالت کے لائسنس بھی معطل نہیں کرائے۔ دونوں پیش ہوکر وضاحت کریں، کیوں نا ان کے کیس بار کونسل کے انضباطی ٹربیونل کو بھجوا دیئے جائیں۔

پنجاب بور کونسل

مزید : صفحہ اول


loading...