حکومتی اقدامات زیرو‘ سرائیکی خطہ میں احساس محرومی بڑھ رہا ہے‘ غلام فرید کوریجہ

حکومتی اقدامات زیرو‘ سرائیکی خطہ میں احساس محرومی بڑھ رہا ہے‘ غلام فرید ...

  



لیاقت پور ( نمائندہ پاکستان ) چیئرمین سرائیکستان صوبہ محاذ خواجہ غلام فرید کوریجہ نے عمائدین علاقہ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت نے سرائیکی خط کی عوام سے صوبہ کے نام پر ووٹ لیے تھے اور حکومت(بقیہ نمبر22صفحہ12پر)

نے ملتان میں صوبے کا سیکرٹریٹ بنانے کا بھی اعلان کیا تھا مگر اب صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان کہہ رہے ہیں کہ ہمارے پاس اکثریت نہیں ہے حکومت عوام سے کیے گئے وعدے پورے نہیں کر رہی ہے جس سے سرائیکی خط میں احساس محرومی بڑھتا جا رہا ہے انہوں نے کہا سردار اختر مینگل نے راجن پور اور ڈیرہ غازی خان کے اضلاع کو بلوچستان میں شامل کرنے کی بات کی ہے حالانکہ مذکورہ دونوں اضلاع لسانی، ثقافتی، تاریخی اور جغرافیائی لحاظ سے کبھی بھی بلوچستان کا حصہ نہیں رہے ہیں انہوں نے کہا کہ ماضی میں محکوم قوموں بلوچی، سندھی، پختون اور سرائیکی کا " پونم " کی شکل میں اتحاد رہ چکا ہے اور سردار عطاء اللہ مینگل کے ساتھ ہم نے پونم میں اکٹھے کام کیا ہے اگر سردار اختر مینگل بلوچستان کے مسائل کا حل چاہتے ہیں تو انہیں چاہیے کہ وہ پونم کو بحال کریں انہوں نے کہا کہ اقلیتوں کے مسائل حل کیے جائیں اور اقلیتوں کو بھی اپنے نمائندے منتخب کرنے کا حق دیا جائے جب تک ملک میں کمزور طبقہ کو حقوق نہیں دیے جائیں گے اس وقت تک ملک کے معاملات بہتر نہیں ہو سکتے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر