شادی شدہ خاتون کی قابل اعتراض تصاویر بنانے پر اوباش کیخلاف مقدمہ 

شادی شدہ خاتون کی قابل اعتراض تصاویر بنانے پر اوباش کیخلاف مقدمہ 

  



 رحیم یار خان (نمائندہ پاکستان)قریبی تعلق دار نے نشہ آو ر کھانا کھلا دیا‘ بیہوشی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے شادی شدہ خاتون کی قابل(بقیہ نمبر37صفحہ12پر )

 اعتراض تصاویر بنا لیں‘ بلیک میل کرتے ہوئے 8ماہ تک جنسیبداخلاقی کا نشانہ بناتا رہا اور 10لاکھ روپے کی رقم بھی وصول کرلی‘ علم ہونے پر شوہر نے بیوی کوطلاق دیدی‘متاثرہ کی دوسری جگہ شادی ہوجانے کے باوجود ملزمان کی جانب سے سنگین نتائج کی دھمکیاں او ر تصاویر اس کے قریبی رشتہ داروں کو ارسال کردیں۔متاثرہ کی رپورٹ پر پولیس نے مقدمہ درج کرلیا۔ بھٹی کالونی تحصیل خانپور کی رہائشی انیلا بی بی نے پولیس کو اپنی تحریری شکایت میں بیان کیا کہ اوباش ملزم محمد تنویر جوکہ اس کے سابقہ شوہر ندیم احمد کا قریبی تعلق دار ہے‘ جو اس کے شوہر کی عدم موجودگی میں ان کے گھر آیا اورنشہ آور کھانا ہمراہ لایا‘ کھانا کھانے پر وہ بیہوش ہوگئی‘بیہوشی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ملزم محمد تنویر نے اس کی برہنہ تصویریں بنالیں اور بلیک میل کرتے ہوئے 8ماہ تک اس کے ساتھ جنسیبداخلاقیکرتا رہا او ر مختلف اوقات میں دس لاکھ روپے کی رقم بھی وصول کرلی۔شوہر ندیم احمد کو علم ہونے پر اسے طلاق دیدی۔بعدازاں وہ محمدتنویر کے بھائی نوید احمد کے گھر جاکر بلیک میلنگ بارے شکایت کی۔ ملزم محمدتنویر اوراس کے بھائی نوید احمد انہیں سنگین نتائج کی دھمکیاں دیتے ہوئے گھر سے دھکے دے کر نکال دیا اور مزید رقم کا مطالبہ شروع کردیا۔ورثاءنے اس کی دوسری جگہ شادی کردی‘ دونوں ملزمان نے اس کی تصویریں وٹس اپ کے ذریعے اس کے قریبی رشتہ داروں کو ارسال کردیں۔متاثرہ انیلا بی بی کی رپورٹ پر پولیس نے مقدمہ نمبری 1134/19بجرم 376/292اور 384ت پ کے تحت درج کرلیا اور ملزمان کی تاحال گرفتاری عمل میں نہ لائی گئی ہے۔ متاثرہ انیلا بی بی نے میڈیا کے توسط سے اعلی حکام سے انصاف فراہم کا مطالبہ کیا ہے۔

تصاویر 

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...