حکومت کی تبدیلی ملاکنڈ ڈویژن میں نظر آنے لگی

  حکومت کی تبدیلی ملاکنڈ ڈویژن میں نظر آنے لگی

  



الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر)حکومت کی تبدیلی ملاکنڈ ڈویژن میں نظر آنے لگی ملاکنڈ ڈویژن ٹیکس فری زون ہونے کے باوجود حکومتی وقت عوام پر ٹیکس لاگو کرنے کی کوشش کر نے میں مصروف۔ تاجروں اور عوامی حلقوں سراپا احتجاج بن گئے۔ ڈویژن بھر میں شدید رد عمل۔ٹیکس فری زون ملاکنڈ میں بجلی بل، ٹیلیون بل، نجی کاروبار پر ٹیکس کے تیاری کرنے کی کوشش تیز کرنے کے بعد پراپرٹی ٹیکس سمیت نئے ٹیکس لگانے کے منصوبہ بندی کی جارہی ہے، ملاکنڈ ڈویژن بشمول کوہستان کے تین اضلاع میں ریاست سوات کی پاکستان میں ضم ہونے کے بعد ریاست کو دی گئی مراعات کو یکساں پامال کیا جارہا ہے یہ زون گزشتہ کئی سال سے مسلسل قدرتی آفات او ر دہشت گردی سے متاثرہ ہونے کے باوجود حکومت کی بدحال ملاکنڈ ڈویژن کے عوام پر کوئی رحم نہیں آیا۔حکومت متاثرہ زون کو مزید ریلیف دینے کی بجائے ان سے ریاست سوات کے دیئے ہوئے مراعات چیھننے کی کوشش کررہے ہیں جو کسی صورت قبول نہیں کی جائے گی۔ ملاکنڈڈویژن کے پسے ہوئے عوام معاشی، ذہنی اوراقتصاد ی طور حکومت کے اس اقدام کو ماننے سے انکاری ہیں۔ڈویژن بھر میں ٹیکس لاگو کرنے پر عوامی حلقوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ صوبائی حکومت نے ملاکنڈ ڈویژن اور سوات سے تقریبا تمام سیٹوں پر کامیابی حاصل کی تھی ملاکنڈ ڈویژن کے عوام کو تحریک انصاف کو ووٹ دینا مہنگا پڑ گیا۔عوامی حلقوں میں غیر یقنی صورتحال پر شدید تشویش کی لہر دوڑ چکی ہے عوامی زہنوں میں صوبائی حکومت کے خلاف نئے سوالات جنم لے رہے ہیں۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...