فرانسیسی فوج کی مالی میں کارروائی،33دہشت گردوں کو ہلاک کردیا

فرانسیسی فوج کی مالی میں کارروائی،33دہشت گردوں کو ہلاک کردیا

  



پیرس(این این آئی)فرانس کے صدر ایمانوئیل میکرون نے اعلان کیا ہے کہ فرانسیسی فوج نے افریقی ملک مالی میں کارروائی کے دوران خطے میں سرگرم 33 دہشت گردوں کو ہلاک کردیاہے۔غیر ملکی خبر ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق فرانسیسی صدر ایمانوئیل میکرون مغربی افریقہ کے دورے پر ہیں جہاں انہوں نے اپنی فوج سے بھی ملاقات کی۔رپورٹ کے مطابق مالی کے وسطی علاقے موپٹی میں کمانڈوز پر مشتمل مختلف ٹیموں نے کارروائی کی جس کے لیے ہیلی کاپٹرز کی مدد بھی حاصل تھی جہاں چند روز قبل ہی ہیلی کاپٹر کے حادثے میں 13 فرانسیسی فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔فرانسیسی صدر میکرون نے آئیوری کوسٹ میں فرنچ برادری سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 33 دہشت گردوں کو مارا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ کامیابی سے مالی، خطے اور ہماری اپنی سلامتی کے لیے ہمارے تعاون کے سلسلے میں ہماری فورسز کے عزم کا اظہار ہوتا ہے۔خطے میں دہشت گردوں کے خلاف فرانس کی فوج کے کارروائیوں کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہمیں نقصان بھی اٹھانا پڑا اور ہمارے فوجیوں کے عزم کے باعث کامیابیاں بھی ملیں۔گزشتہ ماہ ہیلی کاپٹر حادثے میں فوجیوں کی ہلاکتیں خطے میں گزشتہ چار دہائیوں کے دوران فرانسیسی فوجیوں کی ایک ساتھ بڑی ہلاکتوں میں سے تھیں جہاں 4 ہزار 500 فرانسیسی فوجی دہشت گردوں کے خلاف جنگ میں برسرپیکار ہیں۔رپورٹ کے مطابق فرانسیسی صدر میکرون اپنے فوجیوں کے ساتھ کرسمس منانے کے لیے جمعے کو آئیوری کوسٹ پہنچے تھے لیکن دورے میں ان کے لیے خطے میں سرگرم دہشت گردوں کا معاملہ بھی اہمیت کا حامل ہے۔دوسری جانب فرانسیسی مسلح افواج سے متعلق وزارت کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ مالی کے علاقے موپٹی میں فوجی کارروائی میں دہشت گردوں کے ایک کیمپ کو نشانہ بنایا گیا جہاں دہشت گردوں کی خاصی تعداد جمع تھی۔بیان میں کہا گیا ہے کہ کارروائی کے دوران ڈرون اور ہیلی کاپٹر کے ذریعے بھی دہشت گردوں کو نشانہ بنایا گیا اور رات بھر فائرنگ کا تبادلہ ہوا۔ان کا کہنا تھا کہ فرانسیسی فوج نے دہشت گردوں کے قبضے سے بھاری اسلحہ، چار گاڑیاں، اینٹی کرافٹ توپ اور کئی موٹرسائیکلیں برآمد کیں۔خیال رہے کہ مغربی اور وسطی افریقہ میں جاری آپریشن فرانس کا بیرون ملک سب سے بڑا فوجی آپریشن ہے جس میں اس کے ساڑھے 4 ہزار سے زائد فوجی حصہ لے رہے ہیں۔

دہشت گردوں نے 2013 میں شمالی مالی کے اہم علاقوں پر قبضہ کر لیا تھا جس کے بعد فرانس کی فوج نے مقامی حکومت اور فوج کی معاونت کرتے ہوئے مداخلت کی تھی جس کے نتیجے یہ جنگجو صحرا کی جانب واپس لوٹنے پر مجبور ہو گئے تھے اور انہوں نے جنوبی مالی کی جانب توجہ مرکوز کر لی تھی۔مالی میں 2013 سے جاری آپریشن میں اب تک 44 فرانسیسی فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔

مزید : عالمی منظر /پشاورصفحہ آخر