اسرائیلی حکام کی فلسطینیوں پر بیرون ملک سفری پابندیاں

  اسرائیلی حکام کی فلسطینیوں پر بیرون ملک سفری پابندیاں

  



اریحا (این این آئی)اسرائیلی حکام کی جانب سے نام نہاد سیکیورٹی وجوہات کی آڑمیں فلسطینی شہریوں کے بیرون ملک سفر عاید ناروا پابندیوں کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ اسرائیلی پابندیوں کے علی الرغم گذشتہ ماہ الکرامہ گذرگاہ سے 12 فلسطینی شہریوں کو بیرون ملک جانے سے روک دیا گیا۔ 32 ہزار فلسطینیوں کی آمد ورفت ہوئی۔ گذشتہ ہفتے16 ہزار 271 فلسطینیوں کو بیرون ملک سفر کی اجازت دی گئی جبکہ 16 ہزار584 بیرون ملک سے غرب اردن داخل ہوئے۔مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق فلسطینی پولیس کا کہنا تھا کہ کاغذات اور سفری دستاویزات مکمل ہونے کے باوجود اسرائیلی حکام نے الکرامہ گذرگاہ سے اردن داخل ہونے والے متعدد فلسطینیوں کو بیرون ملک جانے سے روک دیا۔ ان میں سے بعض شہریوں کو یہ بھی نہیں بتایا گیا کہ انہیں سفر سے کیوں روکا گیا ہے۔ اس دوران فلسطینی پولیس نے 271مشتبہ ملزمان کو حراست میں لے لیا۔فلسطینیوں کو دو طرفہ آمد ورفت کے لیے گذرنے کی اجازت دی گئی۔ اس دوران صہیونی فوجیوں نے متعدد مشتبہ فلسطینیوں کو حراست میں لیا گیا۔ قابض فوج نے متعدد فلسطینیوں کو جرائم میں ملوث ہونے کی پاداش میں حراست میں لے لیا۔فلسطینی شہریوں اورانسانی حقوق کے کارکنوں کا کہنا تھا کہ صہیونی حکام کی جانب سے شہریوں کے بیرون ملک سفر پر عاید پابندیاں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کا تسلسل ہیں -

اور اسرائیلی انتظامیہ فلسطینیوں کو بلیک میل کرنے اوراْنہیں خوف زدہ کرنے کے لیے ان پر سفری قدغنیں عاید کر رہی ہے۔

مزید : عالمی منظر /پشاورصفحہ آخر


loading...