کمزور معاشی پالیسیوں کی وجہ سے  خارجی محاذ پر سمجھوتے کرنا پڑ رہے ہیں:مصطفٰی کمال

کمزور معاشی پالیسیوں کی وجہ سے  خارجی محاذ پر سمجھوتے کرنا پڑ رہے ہیں:مصطفٰی ...

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر) پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ کمزور معاشی پالیسیوں کی وجہ سے پاکستان کو خارجی محاذ پر سمجھوتے کرنا پڑ رہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان اقوام متحدہ کے اجلاس کے دوران خود یہ تجویز دی تھی کہ مسلمانوں کا عالمی سطح پر ایک چینل ہونا چاہیے جس پر اہم مسلم ممالک کے سربراہان سنجیدہ ہوگئے لیکن وزیراعظم عمران خان نے آخری لمحے اپنی جگہ وزیر خارجہ کی شرکت کی بات کی اور پھر انہیں بھی نہیں بھیج کر مسلم امہ کے اتحاد کو پارہ پارہ کردیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان ہاس کے باہر کارکنان کے تربیتی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ مسلم امہ کے حوالے سے ملائیشیا میں منعقد ہونے والی کوالالمپور سمٹ 2019 میں پاکستان کی شرکت نا کرنا افسوسناک ہے۔ اس طرح کے فیصلے عالمی سطح پر پاکستان کی تنہائی کا باعث بن رہا ہے، مستقبل میں پوری قوم کو ناقابلِ تلافی نقصان اٹھانا پڑ سکتا ہے۔ ملائیشیا نے کشمیر کے مسئلے پر بھارتی دبا کو مسترد کر دیا تھا جبکہ بھارت نے ملائیشیا کو پام آئل کی درآمدات معطل کرنے کی دھمکی دی تھی۔ دوسری جانب ترکی ہر برے وقت میں پاکستان کے حق میں اٹھنے والی پہلی آواز ثابت ہوتا ہے۔ حکومت کا دوسرا سال بھی آدھا گزر چکا ہے اب تک ترجیحات کا تعین نہیں کیا گیا۔ جو مسئلہ ابھر کر سامنے آ جاتا ہے سب اپنے کام چھوڑ کر اسی پر بیان بازی شروع کر دیتے ہیں۔ ملک ایسے نہیں چل سکتا، عوام کو بھی اس بات کا یقین ہو چکا ہے کہ وفاقی، صوبائی اور شہری حکومتوں میں لیڈر شپ کا فقدان ہے۔ قبل ازیں ممبر نیشنل کونسل، کراچی چیمبر آف کامرس کے سابق و جمیعت پنجابی سوداگران کے موجودہ صدر سعید شفیق نے کردار سازی اور تبدیل ہوتی ہوئی معاشرتی روایات پر کارکنان سے بات کی اور اپنے تجربے کی روشنی میں موجودہ معاشرتی مسائل کے حل سے آگاہ کیا۔

مزید : صفحہ اول /پشاورصفحہ آخر