پاکستان کی 70سالہ تاریخ کو دیکھتے ہوئے بہت سی طبقاتی کشمکشیں موجود ہیں:ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی

پاکستان کی 70سالہ تاریخ کو دیکھتے ہوئے بہت سی طبقاتی کشمکشیں موجود ہیں:ڈاکٹر ...

  



  کراچی (اسٹاف رپورٹر) کنو ینر ایم کیو ایم پاکستان ڈاکٹر خالد مقبو ل صدیقی نے کہا کہ آج ریلیا ں پھر کر اچی کی سڑکو ں پر ہیں اور پاکستان کی 70سالہ تا ریخ کو دیکھتے ہو ئے بہت ساری طبقاتی کشمکش مو جو د ہیں 20لا کھ جا نو ں کا نزارنہ دیکر پاکستان بنایا ہمیں کہا جا تا ہے کہ فرزند زمیں نہیں ہو۔اس سڑکو ں پر آنے والے اسی طرح کی صورتحا ل کا شکار ہیں کہ جو فر د سزاکا مستحق کہلا یا وہ بھی فر زند زمیں نہ ہو نے کا طعنی سن رہا ہے پاک فو ج کیلئے جنر ل پر ویز مشرف کے خطرات کا مقابلہ کیا اپنی جا ن جو کھوں پر رکھی لیکن ملک کا نام روشن کیا دشمن کے دانت کھٹے کئے آج ٹھا ٹے ما رتے سمند ر کی طر ح عوام کا ایم کیو ایم پاکستان کا مظا ہرہ میں شرکت نو شتہ دیوار ہے ہم عدالتو ں کا احترام کر تے ہیں ہم کہتے ہیں کہ ملک کو طا قت کے زریعے نہیں انصاف کے زریعے دیا جا سکتا ہے پو رے پاکستان کے خطے میں بر ابر کے مفادات وحق ہو نا چاہیے ہم نے ہمیشہ عدالتو ں کے انصاف کو سر اہا ہے لیکن ہم ڈرتے ہیں کہ عدالتو ں سے نظام انصاف سے اعتما د نہ ختم ہو عوام چاہتے کہ کسی اشخصاص با لخصوص حقومی عدالت نے جو فیصلہ دیا آئین وقانون سے ما ورا تمام تعداد سے ماورا شریعت سے ما ورایک ایسا فیصلہ اور زبان استعما ل کی 70سال کی تا ریخ میں سندھ کے شہر ی علا قوں میں بسنے والے لو گ انکے ساتھ جو کچھ ہو اسکی حساسیت بڑھ چکی ہے فیصلے سے ایک فر د کی نہیں پو ری قوم کی تو ہین نظر آئی ہمیں اس پر اپیل کر نے کا اور اعتراض کرنے کا حق ہے جسکا ہم نے استعمال کیا کل سندھ بھر میں بڑبڑے اجتما عات ہو ئے ہم نے ثا بت کیا کہ ہم احسان فر امو ش نہیں جو پاکستان پر احسان کر تا ہے وہ ہم پر احسان کر تا ہے ہم پر ویز مشرف کی سزاکو متنازعہ کہہ رہے ہیں ہیں 40سال جنر ل پر ویز مشرف کے ملک کی خد مت کی آرٹیکل 6لگتا ہے تو کسی کے پا س حق نہیں کہ اسکے ساتھ جڑے افراد کو چھو رڈیں 12اکتوبر 1999 میں اپنی ذہا نت سے ملک کو مشکلا ت سے نکالا ہمیں انکا احسان ما ننا چاہیے پر ویز مشرف نے فی کس آمد نی میں اضا فہ کیا معیشت کو اٹھا یا میڈیا بحا ل کیا لیکن جمہو ری حکو متو ں میں معیشت اور میڈیا دونو ں پریشان رہے ہیں ایک آمرنے جمہو ریت سے زیا دہ تر قی کا ریکا رڈ قائم کیا عدالتو ں کا احترام کر تے رہینگے اعلی عدالتو ں سے درخواست کر یں گے کہ ایسے لفا ظ عدالتو ں سے نہ نکا لے جا ئیں جس سے کسی قوم کے جذبا ت مجر وح ہو ں تو ہیں کا پہلو ہے ہم اعلی عدالتو ں سے پو ری طر ح انصاف کی امید رکھتے ہیں ایک جا گیر دارنہ جمہو ریت ہے 11سال تک پی پی پی نے سندھ کے شہر ی علا قوں میں معاشی دہشت گر دی جا ری رکھی ہو ئی ہے کر اچی نے جمع ہو کر انصاف کی طلبگا ر ی کا مطا لبہ کیا ہے۔سینئر ڈپٹی کنوینر عامر خان نے کہا کہ اہلیا ن کر اچی میں تا جر،سما جی تنظیمو ں اور تمام قومیتو ں سے تعلق رکھنے والو ں نے پر ویز مشرف کی حما یت میں مظا ہر کر کے اظہا ر یکجہتی کا ثبو ت دے دیا ہے آج ایم کیو ایم نے صرف مظا ہر ہ نہیں کیا بلکہ یہ ثا بت کیا ہے کہ ایم کیو ایم منظم ہے ڈٹی ہو ئی ہے جمی ہو ئی ہے اور ایک بھر پو ر سیا سی جماعت ہے انہو ں نے کہا کہ ایم کیو ایم پر جب جب ظلم ہو ا ہے وہ اور طا قتور بنکر سامنے آئی ہے آج اتنے بڑے اجتما ع میں ہما ری ریلی کے با ئیکا ٹ کی با ت کر نے والو ں نے انکا با ئیکا ٹ کر دیا ہے جو لو گ بھارتی شہر یت ما نگ رہے تھے انہیں مستر د کر نے کا اعلان کر تے ہیں عامر خان نے کہاکہ میں واضع جر نا چاہتا ہو ں کہ ہم شفاف اور غیر جا نبد ار عدالت کا احترام کر تی ہے ہمیں یقین ہے کہ انصاف بھی عدالیہ سے ملے گا ہمیں ججوں پر اعتماد ہے وہ ہی اس گھتی کو سلجھائیں گے انصاف ہو تا ہو ا نظر آئے اور ہو نا بھی چاہیے اس تناظر میں انصاف نظر نہیں آرہا وہ جنر ل مشرف جس نے اس پاکستان کی 40بر س خدمت کی جس نے کا رگل میں جا کر بھارت  کو لرزا کر رکھ دیا تھا بھارتی کہتے ہیں کہ یہ وہ جنر ل ہے جو 19کلو میٹر اند ر بھارت میں گھس گئے تھے پاکستان نے انکے دور میں تر قی کی اس جنر ل مشرف کو غدار کہنا افسوسنا ک اور انتقامی سوچ کی عکا سی کر تا ہے ہم عدالیہ کے معزز ججوں سے یہ درخو است کر تے ہیں کہ پاکستان جن خطرات کا شکا ر ہے با رڈر زپر جو حا لت ہے اس پر نظر رکھیں ہم عدالتو ں سے انصاف چاہتے ہیں جمہو ریت ایسے نظام کا نام ہے جسکے پا س مینڈیٹ ہو تا ہے اسی کے پا س اختیار ہو تا ہے جمہو ریت یہ نہیں کہ اختیار کسی کے پاس کر اچی کے لو گو ں کے آمر یت کے سواکچھ نہیں دیکھا معز زججو ں سے درخو است کرونگا کہ جو تا ثر انتقام کا بن رہا ہے اسے دور کر کے انصاف فر اہم کر یں۔ ڈپٹی کنوینر ومئیر کر اچی وسیم اختر نے کہا کہ آج کا اجتما ع ثابت کر رہا ہے کہ عوام نے فیصلہ دے دیا ہے اور وہ اپنے جذبات کے اظہا ر سے پر ویز مشرف کے ساتھ انصاف کے متقاضی ہیں سپر یم کو رٹ سے التجا ہے کہ وہ اس پیر ا 66کو حذف کر ے پیر ا66آئینی غیر شرعی اور اس سے تعصب کی بو آتی ہے  ہم آئین تو ڑنے کیخلا ف ہیں اگر کو ئی آئین تو ڑتا ہے تو آرٹیکل 6تو درست طر یقے سے استعما ل کیا جا ئے نہ وہ واحد کا معاملہ نہ ہو بلکہ ایسا سے جڑے ہر فرد کو اسکا حصہ ہو ناچاہیے۔فیصل سبزواری نے کہا کہ کر اچی شہر میں آج ایم کیو ایم پاکستان نے ایک ایسی ریلی منعقد کی ہے جس پر تنقید کے نشتر بر سائے جا رہے ہیں ہم نے اسکا انعقاد اسلئے کیا ہے کہ انصا ف ہو لیکن اس میں انتشارنہ ہو فیصلے میں پیر ا 66انتہا ئی افسوسنا ک ہے ہم پاکستان کو آگے بڑھتے دیکھنا چاہتے ہیں ہم ہر ادارے کو حد ود وقیو ر میں کام  کر تے دیکھنا چاہتے ہیں جو فیصلے میں خصوصی عدالت نے کیا اس پر دوبا رہ عدالت کو غور کر نا چاہیے اگر ڈی چوک پر پھا نسی کی با ت کی جا ئے گی تو پھر اس میں تعصب کی بو اور فیصلے میں انتشار نظر آتا ہے ہم صوبے میں نام نہا د جمہو ری حکو مت کے عمل پر سوال اٹھا ئے ہیں گڑھی خدا بخش اور لا ڑکا نہ کا برا حال ہے 12سال گزر گئے لیکن سندھ کی لو ٹ کھسوٹ بند نہیں ہو ئی ملک میں حقیقی انصاف ہو نا چاہیے پر ویز مشرف کو بعد از مر گ 3دن تک سزائے مو ت کے کو ن حا می ہیں جنرل ضیا  جنر ل یحی اور ایو ب خان کے دورتک جا ئیں اور ذولفقار علی بھٹو سول ما رشل لا  ایڈمنسٹر ئیٹر تک جا کر فیصلو ں پر دیکھا جا ئے ورنہ ہمیں ایسا لگتا ہے کہ پر ویز مشرف کو عصبیت کا نشانہ بنایا گیا ہے انصاف دینا ہے تو مر دم شما ری اور بلد یا تی اختیارات کو انصاف دینا ہو گا۔

مزید : صفحہ اول /پشاورصفحہ آخر