”احسن اقبال کس کھیت کی مولی ہے؟“صوبائی وزیرنے مثال دیکرسمجھا دیا

”احسن اقبال کس کھیت کی مولی ہے؟“صوبائی وزیرنے مثال دیکرسمجھا دیا
”احسن اقبال کس کھیت کی مولی ہے؟“صوبائی وزیرنے مثال دیکرسمجھا دیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) صوبائی وزیر محمودالرشیدنے کہاہے کہ نواز شریف بھی پکڑے گئے تھے تواحسن اقبال کس باغ کی مولی ہے، حکومت خصوصی عدالت کے فیصلے پر سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر نہیں کررہی ۔

دنیانیوزکے پروگرام ”آن دا فرنٹ“میں گفتگوکرتے ہوئے محمودالرشید نے کہا کہ احسن اقبال نے اگر کوئی بے ضابطگی کی ہے ،اس پرنیب نے تحقیقات کی ہیں تو ان کو گرفتار کرلیا گیا ہے ۔اس میں عمران خان کاکیاقصور ہے ؟احسن اقبال کی گرفتاری سے حکومت کاکوئی تعلق نہیں ہے ، احتساب کاعمل بلا امتیاز جاری رہے گا۔انہوں نے کہاکہ نواز شریف کی ملک سے باہر جا چکے ہیں ، مریم کی بیل ہوچکی ہے اور پیپلز پارٹی کے رہنما بھی ضمانت پر ہیں تو اتنی چیخ و پکار کیوں ہورہی ہے ؟ انہوں نے کہا کہ نیب ن لیگ اورپیپلز پارٹی نے مل کر بنائی اور اس کے بعد یہ دس سال حکومت میں رہے توکیا ان کو اس وقت خیال نہیں آیاکہ ہم بھی ایک دن پکڑے جائیں گے ۔

احسن اقبال کاکہنا تھاکہ نیب کا چیئر مین بھی ہم نے نہیں لگایا بلکہ دونوں پارٹیوں نے مل کرلگایاتھا ، عمران خان نے توصرف ایک بات کی تھی کہ اداروں کو آزاد کردوں گاتو اب ادارے آزاد ہیں۔ انہوں نے کہاکہ نواز شریف بھی پکڑے گئے تھے تواحسن اقبال کس باغ کی مولی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت خصوصی عدالت کے فیصلے پر سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر نہیں کررہی ۔

مزید : قومی