عندلیب عباس نے حکومت کی جانب سے قانون سازی کی بجائے آرڈیننسز لانے کی وجوہات بیان کردیں

عندلیب عباس نے حکومت کی جانب سے قانون سازی کی بجائے آرڈیننسز لانے کی وجوہات ...
عندلیب عباس نے حکومت کی جانب سے قانون سازی کی بجائے آرڈیننسز لانے کی وجوہات بیان کردیں

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تحریک انصاف کی رہنماعندلیب عباس نے کہاہے کہ جو قوانین تیس چالیس سال سے اشرافیہ نے بنائے ہیں ، ان کو تبدیل ہونا چاہئے جب اپوزیشن نئے قوانین کو بنانے کیلئے تعاون نہیں کرتی تو پھر حکومت آرڈیننس لے آتی ہے ۔

اے آروائی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے عندلیب عباس نے کہا کہ وہ لوگ جو اس وقت جیلوں میں بیمار ہیں کیا ان کی بچے اور بہن بھائی نہیں ہیں لیکن جب کہا گیا جیلوں میں کسی کو سیکنڈ کلاس نہ دی جائے تو کہتے ہیں کہ یہ تو انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہورہی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ جو قوانین تیس چالیس سال سے اشرافیہ نے بنائے ہیں ، ان کو تبدیل ہونا چاہئے جب اپوزیشن نئے قوانین کو بنانے کیلئے تعاون نہیں کرتی تو پھر حکومت آرڈیننس لے آتی ہے ۔

مزید : قومی