گرے لسٹ میں مزید چار ماہ

گرے لسٹ میں مزید چار ماہ

  



فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے ایران کو بلیک لسٹ کر دیا گیا، تاہم پاکستان کو گرے لسٹ میں برقرار رکھا اور قرار دیا ہے کہ پاکستان نے اچھے کام کئے،لیکن اب بھی بہت کچھ کرنے والا ہے۔اس پر حکومت کی طرف سے اطمینان کا اظہار کیا گیا اور چین کا بھی شکریہ ادا کیا گیا، جس نے اپنی حمایت نہ صرف برقرارر کھی،بلکہ آئندہ بھی جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔پریس نوٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان نے ایکشن پلان پر خاطر خواہ عمل درآمد کیا، مختلف شعبوں میں بہتر کام کیا تاہم ابھی مزید بہتری کی ضرورت ہے،جو جون تک کرنا ہو گی۔ایف اے ٹی ایف کے مطابق پاکستان نے 27میں سے14تجاویز/ہدایات پر عمل کیا، ابھی تیرہ کی تکمیل باقی ہے، اِس لئے جون تک گرے لسٹ میں رہے گا اور جون کے اجلاس میں پھر سے جائزہ لیا جائے گا۔حکومت کے اطمینان کی وجہ یہ ہے کہ بھارت کی کوشش کے باوجود پاکستان بلیک لسٹ میں نہیں ڈالا گیا اور گرے لسٹ میں ہی رہا ہے،لیکن سوال تو پھر یہی ہے کہ تلوار لٹکتی رہے گی اور مزید سخت اقدامات کرنا ہوں گے،ان میں بعض مملکت کے لئے کچھ زیادہ خوشگوار بھی نہیں ہیں اور اندرونی معاملات میں مشکلات کا باعث بن سکتے ہیں،اجلاس سے قبل بڑے پُرزور انداز میں کہا جا رہا تھا کہ اس اجلاس میں پاکستان کے حق میں فیصلہ متوقع ہے اور گرے لسٹ سے نکل جائے گا،لیکن تجربہ کار صحافیوں اور تجزیہ کار حضرات کا یہ موقف تھا کہ ایسا نہیں ہو سکے گا،کیونکہ بھارت شاید اتنی بڑی رکاوٹ نہ ہو،مگر امریکہ اور بعض یورپی ممالک یہ نہیں ہونے دیں گے اور ایسا ہی ہوا ہے۔اب پاکستان کو باقی ماندہ 13 پروگراموں پر بھی جون سے پہلے عمل کرنا ہو گا، ابھی سے حکمت عملی وضع کرنے کی ضرورت ہے کہ چین کی حمایت تو کام آ رہی ہے،تاہم ترکی کا شکریہ بھی ادا کرنا چاہئے، جس کے صدر رجب طیب اردوان نے بھی کھلے بندوں پاکستان کی حمایت کی۔

مزید : رائے /اداریہ