شہباز شریف حکومت کو گھر بھیجنے سے پہلے وطن واپس آئیں‘ حافظ حسین احمد

        شہباز شریف حکومت کو گھر بھیجنے سے پہلے وطن واپس آئیں‘ حافظ حسین احمد

  



ڈیرہ غازیخان(سٹی رپورٹر) عمران خان کو کرکٹ کھیلنے اور حکومت چلانے میں فرق نظر آگیا ہے اب انہیں حقائق کو تسلیم کرنا پڑ رہا ہے، ملک کا معاشی طور پر دیوالیہ نکل چکا ہے، شہباز شریف حکومت کو گھر بھیجنے سے پہلے خوداپنے گھر تشریف لائیں۔ ان خیالات کا اظہار جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی ترجمان اور سابق سینیٹر حافظ حسین احمد نے صحافیوں سے ٹیلی (بقیہ نمبر28صفحہ12پر)

فونک گفتگو کرتے ہوئے کیاحافظ حسین احمد کا کہنا تھا کہ عمران خان کو اب کرکٹ اور حکومت میں فرق نظر آرہا ہے کرکٹ میں سلیکشن اور میچ فکسنگ ہوتی ہے جس کا عمران نیازی کو کافی تجربہ ہے انہوں نے کہا کہ حکومت نے اپنے 18 ماہ میں مہنگائی، معیشت کی تباہی سے عوام کا جو حال ہوا ہے جس کا اعتراف حکومت خود کررہی ہے ایسے اعتراف کے بعد سلیکٹروں کو بھی سوچنا ہوگا کہ ان کی سلیکشن کتنی غلط ثابت ہوئی ہے، انہوں نے کہا کہ شہباز شریف کہہ رہے کہ وہ حکومت کو گھر بھیجیں گے تو وہ اس سلسلے میں ضرور جدوجہد کریں ہم ان کا ساتھ دیں گے لیکن عمران خان کو گھر بھیجنے سے پہلے وہ خود اپنے گھر پاکستان آجائیں کیوں کہ جب تک اپوزیشن لیڈر کا منصب خالی ہوگا، آصف زرداری جیل اور اسپتال میں ہونگے میاں نواز شریف اور شہباز شریف لندن میں ہونگے اور مریم نواز نے چپ کا روزہ رکھاہوگا ہو تو عمران خان اور اس کی پارٹی اپنی غلطیوں کی وجہ سے گھر جائیں تو جائیں مگر اپوزیشن کے اس سے منتشر رہنے سے ان کو کوئی خطرہ نہیں ہوگا، انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری نے مارچ میں تحریک چلانے کا تو کہا ہے مگر سال کا نہیں بتایا بلاول بھٹو زرداری نے جنوری اور شہباز شریف نے نومبر میں تحریک چلانے کی بات کی تھی یہ دونوں مہینے تو گذر چکے ہیں اپوزیشن کی دونوں جماعتوں کی مصلحت اور مصالحت کا انجام تو ہم نے دیکھ لیا ہے وہ مارچ میں کیسے مارچ کریں گے اس کا تو ابھی تک تو انہوں نے کوئی روڈ میپ بھی نہیں دیا، اپوزیشن جماعتوں کو مارچ سے پہلے اپنی پوزیشن کے بارے میں فیصلہ کرنا ہوگا اپوزیشن کی دونوں بڑی جماعتوں نے تحریک کا اعلان کیا تو جے یو آئی انہیں کبھی مایوس نہیں کرے گی۔

حافظ حسین احمد

مزید : ملتان صفحہ آخر