ٹرائل تاخیر کا شکار، دو سال سے قید ہوں،رہا کیا جائے،آشیانہ سیکنڈل کے شریک ملزم کی درخواست ضمانت

    ٹرائل تاخیر کا شکار، دو سال سے قید ہوں،رہا کیا جائے،آشیانہ سیکنڈل کے ...

  



لاہور(نامہ نگار خصوصی)آشیانہ اقبال ہاؤسنگ سکیم سکینڈل میں میاں شہباز شریف کے شریک ملزم شاہد شفیق نے ضمانت کے لئے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کر لیا(بقیہ نمبر31صفحہ12پر)

۔بسم اللہ انجینئرنگ کے شاہد شفیق نے اپنے وکلاء اشتر اوصاف اور امجد پرویز کی وساطت سے دائردرخواست میں وزارت قانون و انصاف، چیئرمین نیب، ڈی جی نیب اور تفتیشی افسر کو فریق بنایا ہے۔ درخواست گزار کا موقف ہے کہ بسم اللہ انجینئرنگ اور سپارکو کنسٹرکشن کو جوائنٹ وینچر کے ذریعے آشیانہ اقبال پراجیکٹ کا غیر قانونی ٹھیکہ لینے کا الزام لگایا گیا۔ آشیانہ اقبال سکینڈل کی انکوائری شروع ہونے سے پہلے بسم اللہ انجینئرنگ کا ٹھیکہ منسوخ کر دیا گیا تھا۔ مرکزی ملزم سابق وزیر اعلی شہباز شریف اور فواد حسن فواد کی ضمانت منظور ہوچکی ہے۔ سپارکو کنسٹرکشن کے مالک منیر ضیاء اور علی سجاد بھٹہ کی ضمانت سپریم کورٹ سے منظور ہوچکیں۔ ریفرنس میں 104 گواہ شامل جبکہ صرف 9 گواہوں کے بیانات قلمبند کئے گئے۔ دو سال سے گرفتار ہوں لیکن ٹرائل ابھی ابتدائی مراحل میں ہے۔ قانون کے مطابق جب ٹرائل تاخیر کا شکار ہو تو ملزموں کو قید نہیں رکھا جاسکتا، ضمانت بعد از گرفتاری منظور کرکے رہا کرنے کا حکم دیاجائے۔

درخواست ضمانت

مزید : ملتان صفحہ آخر