کرکٹ،ہاکی،سکواش اور سنوکر کے بعد کبڈی،پاکستان ایک بار پھر عالمی چیمپئن

کرکٹ،ہاکی،سکواش اور سنوکر کے بعد کبڈی،پاکستان ایک بار پھر عالمی چیمپئن

  



کبڈی کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ورلڈ کپ بھارت سے باہر پاکستان میں ہوا جہاں آسٹریلیا، امریکا اور ایران سمیت دنیا بھر سے ٹیمیں آئیں اور پنجاب کے مختلف شہروں میں میچز منعقد ہوئے،کبڈی ورلڈ کپ کی تاریخ میں ایسا پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ اس کی میزبانی بھارت کے علاوہ کسی ملک کے پاس آئی ہے۔ یہ بھی پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ بھارت اپنے اعزاز کا دفاع کرنے میں ناکام رہا ہے۔ پاکستان کو بھارت کے خلاف یہ فتح مسلسل چار مرتبہ اس سے شکست کھانے کے بعد ملی ہے۔لاہور کے پنجاب سٹیڈیم میں ہونے والے کبڈی ورلڈکپ 2020 کے فائنل میں پاکستان نے انڈیا کو 41 کے مقابلے میں 43 پوائنٹس سے شکست دے کر کبڈی کا ورلڈکپ پہلی مرتبہ اپنے نام کر لیا ہے۔مقابلے میں انڈیا کو آغاز سے ہی برتری حاصل رہی جو دوسرے ہالف کے وسط تک برقرار رہی تاہم پاکستان کی ٹیم کی جانب سے عمدہ کھیل پیش کیا گیا اور دیکھتے ہی دیکھتے بازی پلٹ گئی۔ایک موقع پر میچ ختم ہونے میں صرف 10 منٹ باقی تھے اور انڈیا کو پاکستان پر 30 کے مقابلے میں 32 پوائنٹس کی برتری حاصل تھی تاہم پاکستانی کھلاڑیوں کی جانب سے لگائے جانے والے پھرتیلے داؤ کارگر ثابت ہوئے اور ایک انتہائی سنسی خیز مقابلے کے بعد پاکستان نے انڈیا کو 41 کے مقابلے 43 پوائنٹس سے شکست دے کر ٹائٹل اپنے نام کر لیا۔بھارت کو فائنل میں شکست دے کر تاریخ میں پاکستان کانام سنہری حروف میں درج کردیاہے، پاکستان کبڈی ٹیم کے تمام کھلاڑی اور آفیشلز ہمارے سروں کا تاج ہیں اورہمارا فخر ہیں۔ اس موقع پر پاکستان کبڈی فیڈریشن کے صدر چوہدری شافع حسین نے کہاکہ جس طرح میڈیانے ٹورنامنٹ کے دوران ہماری کوریج کی اور ہمیں خوب پروموٹ کیا اس سے ہماری ٹیم کا بہت بلند ہوگیا اور ہم نے بھارتی سورماؤں سمیت تمام مدمقابل آٹھ بین الاقوامی ٹیموں کو شکست فاش دی لیکن میں ذاتی حیثیت میں سمجھتاہوں کہ جیت کی اصل وجہ ہماری محنت کے ساتھ ساتھ قوم کی دعائیں ہیں جس کے باعث آج ہم سرخرو ہوئے ہیں۔ انھوں نے مزید کہاکہ کبڈی ٹورنامنٹ کا پاکستان میں منعقد ہونا اور اس میں بھارت سمیت آٹھ ممالک کی ٹیموں کا شرکت کرنا ایک بہت بڑی کامیابی ہے جس سے تمام دنیا میں پاکستان کا سافٹ امیج گیاہے اوریہ بات ملک کے تمام کھیلوں کے لئے بہت مفید ثابت ہوگی اور جلد دنیاایک مرتبہ پھر پاکستان میں آکر خود کو محفوظ سمجھتے ہوئے بلاجھجک آئے گی۔ جبکہکبڈی ورلڈ کپ 2020ء کے فائنل کے مہمان خصوصی گورنر پنجاب چودھری محمد سرورنے پاکستان کی فاتح کبڈی ٹیم کو ورلڈ کپ ٹرافی، رنر اپ ٹرافی بھارت کو دی،گورنرپنجاب نے پاکستان کی فاتح ٹیم کے کھلاڑیوں کو سونے اور رنر اپ بھارت کی ٹیم کے کھلاڑیوں کو چاندی کے میڈلز پہنائے، گورنر پنجاب چودھری محمد سرور نے عالمی چیمپئن پاکستان کی ٹیم کو ایک کروڑ روپے انعام،رنراپ ٹیم بھارت کو 75لاکھ روپے جبکہ ایران کی ٹیم کو تیسری پوزیشن حاصل کرنے پر 50لاکھ روپے کے کیش انعامات دیئے گئے۔صوبائی وزیر کھیل رائے تیمور خان بھٹی نے مہمان خصوصی گورنر پنجاب چودھری سرور کو سوینئر پیش کیا جبکہ گورنر چودھری محمدسرور نے صوبائی وزیر کھیل رائے تیمور خان بھٹی، صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت، صوبائی زراعت ملک نعمان لنگڑیال اور کبڈی فیڈریشن پاکستان کے صدر چودھری شافع حسین، سیکرٹری سپورٹس پنجاب احسان بھٹہ، ڈائریکٹر جنرل سپورٹس پنجاب عدنان ارشد ولکھ اور راؤ عمر ہاشم، کو سوینئر دیئے۔جبکہڈائریکٹر جنرل سپورٹس پنجاب عدنان ارشد اولکھ نے کبڈی ورلڈ کپ 2020ء جیتنے پر قومی کبڈی ٹیم کو مبارکباد دی ہے، قومی کبڈی ٹیم کے نام اپنے تہنیتی پیغام میں انہوں نے کہا کہ قومی کبڈی ٹیم نے پورے ٹورنامنٹ بالخصوص فائنل میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور ناقابل شکست رہی، فائنل میں دفاعی چیمپئن بھارت کو شکست دینے سے کامیابی کا مزا دوبالا ہوگیا ہے، ڈائریکٹر جنرل سپورٹس پنجاب عدنان ارشد اولکھ نے مزید کہا کہ پاکستان پہلی بار کبڈی کا عالمی چیمپئن بنا ہے جس پر پوری قوم کو اپنے ہیروز پر فخر ہے، پنجاب حکومت نے پہلی بار کبڈی ورلڈ کپ پاکستان میں منعقد کرانے کے لئے بھرپور تعاون کیا جس کی وجہ سے نئی تاریخ رقم ہوئی ہے، پاکستان کرکٹ، ہاکی، سکواش اور سنوکر میں ورلڈ کپ جیت چکا ہے، تاریخ میں پہلی بار پاکستان کبڈی کا عالمی چیمپئن بنا ہے، انہوں نے کہا کہ قومی ٹیم کے ریڈز نے بہترین کھیل کا مظاہرہ کیا اور قیمتی پوائنٹس حاصل کئے جبکہ جاپھیوں کا بھی کامیابی میں اتنا ہی حصہ ہے جتنا ریڈرز کا ہے، میں پوری قوم کی جانب سے قومی کبڈی ٹیم کو دل کی گہرائیوں سے مبارکباد پیش کرتا ہوں۔

مزید : ایڈیشن 1