اردو کو عملاً سرکای زبان کی حیثیت دی جائے،نسیم شاہ ایڈوکیٹ

اردو کو عملاً سرکای زبان کی حیثیت دی جائے،نسیم شاہ ایڈوکیٹ

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر)تحریک نفاذ اردو و صوبائی زبان کے مرکزی صدر نسیم شاہ ایڈوکیٹ نے کہا ہے کہ قائداعظم محمد علی جناح ایک سے زائد مرتبہ اردو کو پاکستان کی قومی اور سرکاری زبان قرار دے چکے ہیں۔ دستورپاکستان میں بھی اس بات کی واضح صراحت موجود ہے کہ پاکستان کی قومی اور سرکار زبان اردو ہوگی۔ اور ابھی کچھ عرصہ قبل پاکستان کی عدالت عظمی سپریم کورٹ بھی اردو کے نفاذ سے متعلق واضح ہدایات دے چکی ہے۔ مگر ان تمام کے باوجود اردو کو اب تک عملا" قومی اور سرکاری زبان کی حیثیت سے نافذ نہ کرنا ایک سنگین سازش ہے۔ لہذا حکومت اور ارباب اختیارکو چاہیئے کہ فوری طورپر اس سازش کا نوٹس لیتے ہوئے قائد اعظم کے فرمان اور دستور پاکستان و عدالت عظمی کے اعلان کے مطابق اردوکو عملا" سرکاری زبان کی حیثیت سے فی الفور نافذ کیا جائے۔ یہ بات انہوں نے 21 فروری کو عالمی یوم مادری زبان کے موقع پرکراچی پریس کلب میں ایک خصوصی اجلاس سے خطاب کر تے ہوئے کہی۔انہوں نے مزید کہا کہ دنیا کے تمام ممالک کی ترقی کے پیچھے اس کی قومی زبان ہوتی ہے۔ جن ملکوں نے اپنی قومی زبان کو سرکاری اور دفتری زبان قرار دیا وہ آج ترقی کی شاہراہ پر گامزن ہیں۔ مگر افسوس ہمارے ہیاں اس بات کو اہمیت نہیں دی جارہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عدالت عظمی کے صریح فیصلے کے مطابق جن اداروں میں اردو کو اس کا جائز مقام نہیں دیا جا رہا ہے ان کے خلاف جلد ہی توہین عدالت کے مقدمات بھی قائم کیئے جائیں گے۔

مزید : صفحہ آخر