انجینئرز آف پاکستان ان ایمریٹس (EPE) کی سالانہ تقریب

انجینئرز آف پاکستان ان ایمریٹس (EPE) کی سالانہ تقریب
انجینئرز آف پاکستان ان ایمریٹس (EPE) کی سالانہ تقریب

  



دبئی (طاہر منیر طاہر) متحدہ عرب امارات میں بسلسلہ روزگار مقیم پاکستانی انجینئرز کی تنظیم EPE کا سالانہ ایونٹ گزشتہ روز ابوظہبی میں ہوا جس میں مہمان خصوصی سفیر پاکستان برائے متحدہ عرب امارات غلام دستگیر تھے جبکہ دیگر شرکائے تقریب میں EPE کے چیئرمین ملک ظہیر اعوان ودیگر اراکین ڈاکٹر طلعت حسین، ملک عمران طاہر، عابد قاضی، محمد اخلاق، انجینئر عبدالوہاب، غیاث الرحمن، راجہ فرقان، مبشر سعید، دلدار حسین، عبدالحمید، عمر حبیب، ڈاکٹر منظور حسین، جمیل حسین شامل تھے۔ سفارتخانہ ابوظہبی کی طرف سے روشن وادوانی، سعید سرور اور میڈم شاہینہ اجمل بھی موجود تھیں۔

اس موقع پر کھلی بات چیت میں نئے اور پرانے انجینئرز اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا اور مختلف شعبوں میں اپنے تجربات سے شرکائے تقریب کو آگاہ کیا۔ تقریب کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا جس کی سعادت حافظ ابو ہریرہ نے حاصل کی جبکہ سٹیج سیکرٹری کے فرائض غیاث الرحمن نے بطریق احسن انجام دیے۔ EPE کی اس سالانہ تقریب میں امارات بھر سے پاکستانی انجینئرز نے شرکت کی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئےEPE کے چیئرمین ملک ظہیر اعوان نے کہا کہ آج سے پانچ سال قبل انجینئرنگ آف پاکستان ان ایمریٹس کا اجراءعمل میں لایا گیا تھا جسے اس قدر پذیرائی ملی کہ ایک تناور درخت بن گیااور متعدد پاکستانی انجینئر ہمارے ساتھ مل گئے۔ ملک ظہیر اعوان نے کہا کہEPE نے اپنے وسائل میں رہتے ہوئے گزشتہ سالوں میں بے شمار نئے انجینئرز کو روزگار دلانے میں مددکی۔ EPE کے زیر اہتمام پاکستان سے نئے آنے والے انجینئرز کی مکمل راہنمائی کی جاتی ہے۔ ان کا سی وی درست کیا جاتا ہے، تجرباتی انٹرویو کیے جاتے ہیں اور حصول روزگار کے لئے مدد کی جاتی ہے۔

ملک ظہیر اعوان نے کہا کہ ہم اس سلسلہ کو مزید آگے بڑھانا چاہتے ہیں جس کے لئے ہمیں آپ سب کی طرف سے عملی معانت درکار ہے۔ سفیر پاکستان غلام دستگیر نے EPE کی کارگزاری کو سراہتے ہوئے کہا کہ یقینا انجینئرز آف پاکستان ان ایمریٹس کی ساری ٹیم مبارکباد اور خراج تحسین لے لائق ہے تاہم EPEکو چاہیے کہ وہ انجینئرز آف پاکستان ان ایمریٹس کی رجسٹریشن حاصل کریں جس کے لئے وہ پاکستان ایسوسی ایشن دبئی PAD سے بھی رابطہ کرسکتے ہیں۔ سفیر پاکستان نےPAD کی کارکردگی خصوصاً ہیلتھ سنٹر کے قیام کو بھی سراہا۔ اس موقع پر مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والوں میں اعزازی شیلڈز بھی تقسیم کی گئیں۔

امارات میں مقیم دو پاکستانی بھائیوں عمار اشفاق اور سنان اشفاق کو تائیکو انڈو میں گولڈ میڈل حاصل کرنے اور پاکستان کا نام عالمی سطح پر بلند کرنے پر خصوصی شیلڈز عطا کی گئیں جبکہ میڈم شاہینہ اجمل، محمد عمیر، گلف نیوز دبئی کے ڈپٹی ایڈیٹر اشفاق احمد، جذبہ کے ایڈیٹر خالد محمود گوندل، طاہر منیر طاہر اور 92 نیوز کے بیورو چیف مدثر خوشنود کو بھی صحافت کی بہترین پرفارمنس پر شیلڈز پیش کی گئیں۔ تقریب کے آخر میں آنے والے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیا گیا اور پرتکلف ڈنر سے تواضع کی گئی۔

مزید : عرب دنیا /تارکین پاکستان