پی ایس ایل افتتاحی تقریب، 132 بھارتی آرگنائزرز نے تقریب کا بیڑہ غرق کیا، چشم کشا انکشافات

پی ایس ایل افتتاحی تقریب، 132 بھارتی آرگنائزرز نے تقریب کا بیڑہ غرق کیا، چشم ...
پی ایس ایل افتتاحی تقریب، 132 بھارتی آرگنائزرز نے تقریب کا بیڑہ غرق کیا، چشم کشا انکشافات

  



کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان سپر لیگ 5 کی افتتاحی تقریب کی تمام تر انتظامی ذمہ داریاں بھارتی شہریوں کو دیے جانے کا انکشاف ہوا ہے ۔

پاکستان میں لوگوں کی جانب سے تقریب کے میزبان ’احمد گوڈیل‘ پر اتنی زیادہ تنقید کی گئی کہ پی سی بی نے انہیں نوکری سے ہی نکال دیا، لیکن کیا صرف افتتاحی تقریب کی ناکامی کے ذمہ دار صرف اور صرف احمد گوڈیل ہیں؟ کسی نے یہ کیوں نہیں سوچا کہ سارے معاملات تو بھارتی شہری چلا رہے ہیں تو ایونٹ کیسے کامیاب ہوگا؟

اینکر پرسن وقار ذکا نے بھی ایک ویڈیو پیغام میں اسی حوالے سے آواز اٹھائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج کل کے حالات میں جب میڈیا والوں کو نوکریاں نہیں مل رہیں ایسے میں 132 کے قریب لوگ انڈیا سے آئے ہیں۔ کشمیر کے جو حالات چل رہے ہیں کیا ایسی صورتحال میں کوئی انڈین چاہے گا کہ پاکستان کا کوئی ایونٹ ہٹ ہو؟

انہوں نے کہا حکومت پاکستان سے پوچھتا ہوں کہ ان لوگوں کو پاکستان کیوں آنے دے رہے ہیں؟ کشمیر کو بھول گئے؟ ہر پالیسی ہمارے آرٹسٹ کیلئے ہوتی ہے؟وہاں ہمارے آرٹسٹوں کے ساتھ کیا سلوک ہوتا ہے؟ انہیں دھکے مار کر نکالا جاتا ہے، ہماری کسی انڈین شہری سے کوئی دشمنی نہیں ہے لیکن ہمارے آرٹسٹ کو آپ لوگ ذلیل کرتے ہیں تو ہم آپ لوگوں کو کیوں آنے دیں؟

وقار ذکاءکا کہنا تھا کہ عوام پی سی بی سے پوچھے کہ 132 انڈین کیا کرنے آئے ہیں؟کیا پاکستان میں کوئی ٹیلنٹ نہیں ہے؟ اگر یہ پاکستان کا ایونٹ تھا تو اس میں پاکستانیوں کو کام ملنا چاہیے تھا۔

صحافی و اینکر پرسن ارشد شریف نے انڈین شہریوں کی جانب سے پی ایس ایل کی افتتاحی تقریب آرگنائز کرنے پر سوالات اٹھائے ہیں۔ انہوں نے پی ایس ایل کے منتظمین میں شامل بھارتی شہریوں کی فہرست شیئر کرتے ہوئے کہا ’ کسی نے بھارتی شہریوں کو پی ایس ایل کی اجازت دی ہے؟ وہ کون ہے جو انڈیا سے ادویات کی درآمد کو پابندیوں سے مستثنیٰ کرنا چاہتا ہے؟ کیا مودی کی جانب سے کشمیر کی جداگانہ حیثیت ختم کرنے کے فیصلے کے بعد بھارت کے ساتھ سفارتی تعلقات میں کمی صرف زبان بندی کیلئے تھی ؟ مودی کا یار کون ہے جو کشمیریوں کے خون کا سودا کر رہا ہے؟

مزید : PSL /PSL News Update