5سال کی عمر سے کم 40فیصد بچے نشوونما کی کمی کا شکار ہیں: حکومت

5سال کی عمر سے کم 40فیصد بچے نشوونما کی کمی کا شکار ہیں: حکومت

  

 اسلام آباد(آن لائن،آئی این پی)حکومت نے قومی اسمبلی کو بتایا کہ پمز ہسپتال کو پرائیوٹائز نہیں کیا جارہابلکہ خود مختار بنایا جا رہاہے،سندھ حکومت کراچی سے لیکر تھرپارکر تک صحت کارڈ دے گی تاکہ امیر اور غریب میں فرق نہ رہے، مارچ میں جو جو کورونا ویکسین لگانا چاہے گا اسے ویکسین لگے گی، 1970سے 2018تک ریلوے کو 1.2ٹریلین کا خسارہ ہوا،  موجودہ حکومت میں اس ادارہ کو منافع بخش بنایا جائے گاپہلی مرتبہ مرکزی حکومت صوبائی حکومت کے خلاف سراپا احتجا ج بن گئی۔سندھ میں اپوزیشن لیڈر کی گرفتاری پر حکومت نے ڈیسک بجا بجا کر پیپلز پارٹی کو آڑے ہاتھوں لیا،اذان مغرب کے دوران بھی احتجاج جاری رہا،دھکم پیل،نعرے بازی،کورم کی نشاندہی ہونے پر اجلاس آج شام چار بجے تک ملتوی کردیا گیا۔،حکومت نے انکشاف کیا ہے کہ ملک میں پانچ سال کی عمر سے کم 40فیصد بچے نشوونما کی کمی کا شکار ہیں ملک میں کورونا وائرس کیلئے کوئی ویکسین تیار نہیں کی جارہی، چینی کمپنی کو پاکستان میں ٹرائل کیلئے 21ملین کورونا ویکسین دینے کا معاہدہ ہوا تھا، ایک ملین کورونا ویکسین اس ماہ مل جائیں گی، 20ملین دوسرے اور تیسرے مرحلے میں ملیں گی،ریلوے کا سالانہ پنشن بل 35ارب جبکہ تنخواہ کا بل 29ارب  ہے،گزشتہ حکومتوں نے جو ریلوے 25ہزار ملازمین پر چل سکتی تھی اس میں 70ہزار ملازمین بھرتی کیے۔ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر ریلوے اعظم سواتی،پارلیمانی سیکرٹریز فرخ حبیب،نوشین حامد و دیگر نے پیر کوقومی اسمبلی اجلاس میں وقفہ سوالات کے دوران ارکان کے سوالوں کا جواب دیتے ہوئے کیا۔

قومی اسمبلی اجلاس

مزید :

صفحہ آخر -