ٹانک، زمین تنازعہ، قبائل میں خونریز جھڑپوں کا سلسلہ جاری، 2جاں بحق، 8زخمی 

ٹانک، زمین تنازعہ، قبائل میں خونریز جھڑپوں کا سلسلہ جاری، 2جاں بحق، 8زخمی 

  

ٹانک(نمائندہ خصوصی)جنوبی وزیرستان: زمین ملکیتی تنازعے پر دوتانی اور زلی خیل وزیر قبائل کے مابین خونریز جھڑپوں کا سلسلہ بدستور جاری، مزید دو افراد جاں بحق جبکہ آٹھ شدید زخمی ہوگئے، تفصیلات کے مطابق جنوبی وزیرستان سب ڈویژن وانا کے علاقہ کرکنڑہ میں زمینی تنازعے پر دوتانی اور وزیر قبائل کے مابین دوطرفہ گولہ باری کا سلسلہ بدستور جاری ہے، گزشتہ شب ٹاٹوکی کے علاقہ میں خونریز جھڑپ کے نتیجے میں زلی خیل وزیر قبائل کے مزید دو افراد امیر اور عرفان جان بحق جبکہ اجمات، شیر وزیر،مائتل،ایدریس،عنایت اللہ اورنجیب اللہ شدید زخمی بتائے جاتے ہیں اور گزشتہ دو دن کے جھڑپوں میں مرنے والوں کی تعداد پانچ جبکہ زخمیوں کی تعداد ایک درجن سے زیادہ ہوگئی ہیں زرائع کے مطابق گزشتہ رات ٹاٹوکی کے مقام پر زلی خیل وزیر سے تعلق رکھنے والے زخمی اور ایک شخص کی نعش کو دوتانی قبائل اپنے ساتھ لے گئے اور اس کے بدلے گزشتہ روز سرکاری ایمبولینس میں ہسپتال کو لے جانے والے دوتانی قبائل کے آغوآء شدہ دو افراد کی رہائی کامطالبہ کیا ہے، واضح رہے کہ پورے جنوبی وزیرستان میں مذکورہ واقعہ کے باعث انتہائی سوگ کا عالم ہے علاقے میں تمام کاروباری مراکز بند ہونے سمیت سڑکوں پر ٹرانسپورٹ کی آمد رفت نہ ہونے کے برابر ہے، تمام حکومتی اداروں نے دونوں فریقین کے مابین جاری لڑائی رکھوانے کیلئے اب تک کوئی قابل ذکر اقدامات نہیں لئیگئیہیں، جس کے باعث عام عوام میں ضلعی انتظامیہ کی نااہلی پر شدید اشتعال اور غم و غصہ پایا جاتا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -