احتساب کا نعرہ ڈرامہ‘ قوم تبدیلی سرکار سے مایوس‘ خرم نواز گنڈا پور 

احتساب کا نعرہ ڈرامہ‘ قوم تبدیلی سرکار سے مایوس‘ خرم نواز گنڈا پور 

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر‘ بیورو رپورٹ) مرکزی ناظم اعلی منہاج القرآن خرم نواز گنڈا پور نے کہا ہے کہ جب تک ملک میں الیکٹیبلز موجود ہے ملک میں حقیقی تبدیلی نہیں آسکتی عمران خان جس نظام میں الیکشن لڑے وہ نظام عمران خان کو مبارک ہو کیونکہ ہم پہلے ہی ان کو (بقیہ نمبر47صفحہ 7پر)

کہہ چکے تھے کہ وہ اس الیکٹیبلز کے نظام میں فیل ہو جائیں گے عمران خان خود الیکٹیبلز کو ساتھ لیکر چلنے پر مجبور ہے ملک میں الیکٹیبلز کی دوڑ ہے اگلے الیکشن میں یہ الیکٹیبلز ساتھ کسی اور کے ساتھ ہونگے وہ پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔خرم نواز گنڈا پور نے کہا کہ ہم الیکشن تک عمران خان کے ساتھ تھے الیکشن میں حصہ نہیں لیا تاکہ تبدیلی کے نام پر ووٹ تقسیم نہ ہو جائے ہم نے عمران خان کو منزل مقصود پر پہنچا دیا ہے مگر ملک میں حقیقی تبدیلی کا خواب محض خواب بن کر رہ گیا ہے قوم تبدیلی سرکار سے مایوس ہو رہی ہے سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس کو سرد خانے میں ڈالنے سے نام نہاد احتساب کا پول کھل گیا ہے جو سانحہ ماڈل ٹاون میں مرکزی کردارتھا اسے ہی وفاقی محتسب کاچیئر مین لگا دیا گیا ہے احتساب ہوتا تو نواز شریف باہر نہ ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ جنہوں نے ایک بریانی کی پلیٹ پر ووٹ دیئے اب وہ بھگتیں کیونکہ جب اس نظام الیکشن میں لوگ کروڑوں روپے لگا کر الیکشن لڑیں گے تو تبدیلی کیے آئے گی اس لیے ہم چاہتے ہیں کہ ملک میں متناسب نمائندگی کے تحت الیکشن کرائے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے مطالبے پر پانچ نئے بورڈ ز قائم کیے جا رہے ہیں جس میں ایک ہمارا بورڈ نظام المدارس ہے جس کے سربراہ علامہ امداد اللہ ہونگے کیونکہ اس سے قبل جو وفاق کے بورڈ تھے ان پر اجارہ داری قائم تھی دینی اداروں کو انہوں نے یرغمال بنایا ہوا تھا پھر ہم نے حکومت کو اس طرف متوجہ کیا کہ جب تک یہ نظام تعلیم ہے مدارس دینیہ میں ترقی اور طلباء کے مستقبل میں بہتری نہیں آسکتی نظام المدارس کے قیام سے تعلیمی شعبہ میں انقلاب برپا ہوگامدارس کے طلباء کو قومی دھارے میں لانے کیلئے جدید و قدیم علوم کو یکجا کرنا ناگزیر تھا بہترین نظام تعلیم کے ذریعہ سے انتہاپسندی جیسی بیماریوں کو جڑ سے کاٹنا ممکن ہے۔انہوں نے کہا کہ نظام المدارس بورڈ کے قیام سے یکساں اور متوازن نظام تعلیم متعارف ہوا ہے قومی ادارے امت مسلمہ کی نشاۃ ثانیہ،اتحاد امت کیلئے اور فرقہ پرستی و انتہا پسندی جیسے رجحانات کے خاتمہ کیلئے مکمل سرپرستی کریں تاکہ نظام المدارس کے ذریعہ سے غزالی،ابن سینا اور فارابی جیسی شخصیات پیدا ہو سکیں شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے جو نظام ریاست، نظام احتساب،نظام تعلیم اور انتخابی اصلاحات متعارف کرائیں ہیں وہی ملک میں حقیقی تبدیلی لاسکتی ہیں۔

گنڈا پور

مزید :

ملتان صفحہ آخر -