ایم ڈی اے کو پلاٹ کی نیلامی روکنے کا حکم‘ یکم مارچ تک جواب طلب

         ایم ڈی اے کو پلاٹ کی نیلامی روکنے کا حکم‘ یکم مارچ تک جواب طلب

  

ملتان (خصو صی  ر پو رٹر)  لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ کے جج مسٹر جسٹس جواد حسن نے واسا کی زمین کو لیز پر حاصل کرنے والی کمپنی کو بے دخل کرنے کے خلاف درخواست (بقیہ نمبر40صفحہ 7پر)

پر ایم ڈی اے کو نیلامی سے روکتے ہوئے یکم مارچ کو پیراوئز کمنٹس طلب کرلیے ہیں۔قبل ازیں عدالت عالیہ میں ایم سی آر پرائیویٹ لمیٹڈ کمپنی نے کونسلز اسامہ ملک اور شمیر عبید کے ذریعے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ انہوں نے گلگشت میں موجود واسا کی چار کنال اراضی بیس سال قبل لیز پر حاصل کی تھی جس پر انہوں نے انٹرنیشنل فوڈ چینز بنا رکھی ہیں وہ سیکورٹی اینڈ ایکسچینج آف پاکستان سے رجسٹرڈ شدہ ہیں وہ ملک میں کاروبار کو پھیلانا چاہتے ہیں لیکن واسا حکام نے لیز کنٹریکٹ کی خلاف ورزی کرتے ہوئے گزشتہ سال آپریشن کے ذریعے کنٹریکٹ ختم کر دیا جبکہ اس کی مدت 20 سال کی تھی اور دس سال کی توسیع بھی دی جانی تھی لیکن اس سب کے باوجود 1999 میں ملنے والا کنٹریکٹ 2020 میں ختم کردیا گیا اگر مدت 20 سال تھی تو کنٹریکٹ 2018 میں ختم ہونا چاہیے تھا چونکہ یہ جگہ کنٹریکٹ کے بعد 2002 میں قبضہ میں آئی تھی اس لیے اسے 2020 تک توسیع دی گئی اس بارے میں سول سیشن عدالت سے بھی رجوع کر رکھا ہے جس نے ایم ڈی اے حکام کو زمین کی نیلامی کرنے سے روک دیا تھا  تاہم ایم ڈی اے نے 11 فروری کو نیلامی کا نوٹس جاری کردیا ہے جو کہ سراسر خلاف قانون و آئین۔ ان احکامات پر عمل درآمد کرنے کے لئے عدالت عالیہ سے رجوع کیا گیا ہے جس پر عدالت عالیہ نے فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے یکم مارچ کو پیراوائز کمنٹس طلب کر لیے ہیں  اور ایم ڈی اے کو جائیداد کی نیلامی سے بھی روک دیا ہے۔ اس موقع پر اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل اظہر سلیم کملانہ نے عدالت کی معاونت کی جبکہ ایم ڈی اے کے لیگل ایڈوائزر  بلال امین اور سپیشل پراسیکیوٹر محمد اکرم عدالتی کال پر پیش ہوئے۔

نوٹس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -