مضر صحت خوراک کی تیاری پر 2 فوڈ یونٹس سیل، متعدد کو بھاری جرمانے 

مضر صحت خوراک کی تیاری پر 2 فوڈ یونٹس سیل، متعدد کو بھاری جرمانے 

  

ملتان (سپیشل رپورٹر) فوڈ سیفٹی ٹیموں جنوبی پنجاب میں خوراک میں جعلسازی کرنے والوں کے خلاف کارروائیاں جاری ہیں۔ فوڈ سیفٹی ٹیموں نے 334 فوڈ یونٹس کی چیکنگ (بقیہ نمبر16صفحہ 6پر)

کے دوران غیر معیاری خوراک کی فروخت پر 2 فوڈ یونٹس سیل جبکہ 285 شاپس مالکان کو بہتری نوٹسز جاری کیے۔ تفصیلات کے مطابق ساہیوال میں مارشل ملک فوڈز کو پنیر کی تیاری میں ویجیٹیبل فیٹ کی ملاوٹ کرنے اور خوراک کی تیاری میں پھپھوندی زدہ پنیر کو دوبارہ مکس کرنے پر سیل کر دیا گیا۔ مزید رحیم یارخان میں عبدالحمید ملک کولیکشن سنٹر پر کارروائی کی۔دوران چیکنگ پرمیٹ پاؤڈر اور ڈیٹر جنٹس سے مصنوعی دودھ تیار کیا جا رہا تھا۔ جعلی دودھ تیار کرنے پر ملک کولیکشن سنٹر کو سیل کر دیا گیا۔ غیر قانونی طور پر فوڈ لائسنس کے بغیرخوراک کا کاروبار کیا جارہا تھا۔ کارروائی کے دوران 20 کلو پرمیٹ پاؤڈر،150خالی تھیلے اور 2 مکسنگ ڈرمز برآمد کر لیے گئے۔اس کے علاوہ ملتان میں شنگریلا کوزین بیکرز اینڈ سویٹس کو واشنگ ایریامیں آلودہ پانی کھڑا ہونے پر 25 ہزار، مجاہد ریواڑی سویٹس اینڈ بیکرز بیکنگ ایریا میں حشرات پائے جانے پر 15 ہزار جبکہ خانیوال میں النصیر چکن شاپ کو گوشت ڈھانپ کر نہ رکھنے اور وہاڑی میں بسم اللہ ہوٹل کو صفائی نہ ہونے پر 10،10 ہزار روپے کے جرمانے عائد کیے گئے۔ اسی طرح مظفر گڑھ میں موڈ اینڈ فوڈ ریسٹورنٹ کو پھپھوندی زدہ خام مال موجود ہونے، راجن پور میں ارسلان سویٹس کو ایکسپائرڈ بیکری مصنوعات فروخت کرنے پر 15،15 ہزارروپے کے جرمانے کیے گئے۔ مجموعی طور پر کی گئی کارروائیوں کے دوران 240 لٹر ملاوٹی دودھ، 75 کلو کھلے مصالحے، 90 کلو غیر معیاری خوراک تلف جبکہ 20 کلو پرمیٹ پاؤڈر برآمد کرلیا گیا۔

مضر صحت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -