پارلیمنٹ کا احترام لازم، الیکشن درست ہونگے تو نظام بھی ٹھیک ہو جائے گا: سیاسی رہنماء

پارلیمنٹ کا احترام لازم، الیکشن درست ہونگے تو نظام بھی ٹھیک ہو جائے گا: سیاسی ...

  

  اسلام آبا د(این این آئی) سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن کے بنے رولز پر عمل کیا جائے،نئے مسودے سے پرانے قواعد کا حلیہ نہ بگڑ جائے،قومی ادادوں کے ساتھ پارلیمنٹ کا احترام بھی لازم ہے،سینیٹ کے آزاد امیدوار کے تجویز اور تائید کنندہ بننے پربھی پابندی لگائی جائے،الیکشن درست ہونگے تو سارا نظام ٹھیک ہو جائیگا۔سیاسی جماعتوں کا الیکشن کمیشن میں سینیٹ انتخابات ضابطہ اخلاق کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اے این پی کے میا افتخار حسین نے کہا کہ جو پہلے سے رولز بنے ہیں ان پر عمل کیا جائے، لازمی دیکھا جاہے کہ نئے مسودے سے پرانے قواعد کا حلیہ نہ بگڑ جائے،قومی ادادوں کے ساتھ پارلیمنٹ کا احترام بھی لازم ہے۔ انہوں نے کہاکہ پارلیمنٹ کے احترام کا ذکر بھی مسودے میں شامل کرنے کی یقین دہانی کرائی گئی ہے،سینیٹ کے آزاد  امیدوار کے تجویز اور تائید کنندہ بننے پربھی پابندی لگائی جائے،الیکشن کمیشن نے پہلے سے قواعدپر عمل کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سینیٹ کی بات ہو رہی ہے،عام الیکشن میں بھی قواعدپر عمل ہونا چاہئے،الیکشن درست ہونگے تو سارا نظام ٹھیک ہو جائیگا۔ انہوں نے کہاکہ الیکشن کمیشن کے مسودے پر تجاویز دیدی ہیں،یہ فورم آئین یا قواعد میں تبدیلی نہیں لا سکتا،قانون اور قواعد کو موثر بنانے کے لئے اقدامات ناگزیر ہیں۔تاج حیدر اور میاں اسلم نے کہا کہ چیف الیکشن کمشنر نے سینیٹ انتخابات کے کوڈ آف کنڈکٹ پر تجاویز کیلئے بلایا،چیف الیکشن کمشنر نے کہا سیاسی جماعتوں کے ساتھ مشاورت کے ساتھ معاملات طر کرنا چاہتے ہیں،سیاسی جماعتیں پارٹی ارکان کو ٹکٹ دیتے ہوئے آرٹیکل 62 کا خیال نہیں کرتے،ملک میں پیدا ہونے والے مسائل کی وجہ بکنے والے سیاسی ارکان ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اسمبلیوں۔میں آنے والے ارکان ارٹیکل 62 پر پورا اتریں گے تو ووٹوں کی خریدوفروخت نہیں ہوگی،سیاسی جماعتیں اور الیکشن کمیشن اپنا کردار ادا کریں گے تو تمام انتخابات شفاف ہوں گے۔ مسلم لیگ (ن) کے مصطفی ملک نے کہاکہ سینیٹ الیکشن کے حوالے سے 12 نکاتی ضابطہ اخلاق دیا گیا،ضابطہ اخلاق سے متعلق اپنی تجاویز دی ہیں،چیف الیکشن کمشنر سینیٹ انتخابات شفاف کرانے کیلئے پرعزم ہیں،چیف الیکشن کمشنر نے یقین دہانی کرائی کہ الیکشن کمیشن کا کردار غیر جانبدارانہ ہوگا۔

سیاسی رہنماء 

مزید :

صفحہ آخر -