مردوں کے لیے کورونا وائرس کا ایک اور سائیڈ ایفیکٹ سامنے آ گیا

مردوں کے لیے کورونا وائرس کا ایک اور سائیڈ ایفیکٹ سامنے آ گیا
مردوں کے لیے کورونا وائرس کا ایک اور سائیڈ ایفیکٹ سامنے آ گیا

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) مردوں کے لیے کورونا وائرس کا ایک اور ایسا سائیڈ ایفیکٹ سامنے آ گیا ہے کہ سن کر ان کی پریشانی کی انتہاءنہ رہے گی۔ میل آن لائن کے مطابق چینی ماہرین نے نئی تحقیق انکشاف کیا ہے کہ بالوں کا گرنا بھی کورونا وائرس کے ایک سائیڈ ایفکیٹ کے طور پر سامنے آیا ہے، جو کورونا وائرس کے صحت مند ہونے والے ایک چوتھائی لوگوں میں کسی نہ کسی درجے تک پایا گیا۔ 

رپورٹ کے مطابق اس تحقیق میں سائنسدانوں نے چینی شہر ووہان کے ہسپتالوں میں زیرعلاج رہنے والے کورونا وائرس کے 1ہزار 655مریضوں پر تجربات کیے۔ ان میں سے 359ایسے تھے جن کو کورونا وائرس سے صحت مندی کے بعد بالوں کے جھڑنے کا عارضہ لاحق ہوا، جو ہسپتال سے ڈسچارج ہونے کے 6ماہ بعد بھی برقرار رہا۔ گویا یہ بھی کورونا وائرس کا ایک طویل مدتی سائیڈ ایفیکٹ ہے جو لوگوں کو درپیش آ رہا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ان لوگوں میں بال جھڑنے کا مسئلہ ممکنہ طور پر اس وباءکی وجہ سے لاحق ہونے والی ذہنی پریشانی کے سبب پیش آتا ہے یا پھر کورونا وائرس لوگوں میں ایلوپیشا نامی بیماری کا بھی سبب بن رہا ہے جو بال گرنے کی وجہ بنتی ہے۔ تاہم اس سوال کا حتمی جواب جاننے کے لیے مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔

مزید :

کورونا وائرس -