مثبت اور تسلسل پر مبنی پالیسیوں کی بدولت آئی ٹی ایکسپورٹ میں نمایاں اضافہ ہوا : محمد زوہیب خان

مثبت اور تسلسل پر مبنی پالیسیوں کی بدولت آئی ٹی ایکسپورٹ میں نمایاں اضافہ ...
 مثبت اور تسلسل پر مبنی پالیسیوں کی بدولت آئی ٹی ایکسپورٹ میں نمایاں اضافہ ہوا : محمد زوہیب خان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (لیڈی رپورٹر)  پاکستان سافٹ ویئر ہائوسز ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد زوہیب خان نے کہا ہے کہ مثبت اور تسلسل پر مبنی پالیسیوں کی بدولت آئی ٹی ایکسپورٹ میں نمایاں اضافہ ہوا ہے اور جنوری 2024 میں اس کا حجم265ملین ڈالر رہا جو  39 فیصد کی گروتھ کی نشاندہی کرتا ہے ۔

اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ جنوری 2024 میں آئی ٹی کی نیٹ ایکسپورٹ کا حجم240 ملین ڈالر رہاجبکہ گزشتہ بارہ مہینوں میں اوسطاً یہی حجم 199ملین ڈالر ریکارڈ کیا گیا ۔آئی ٹی کی ایکسپورٹ معاشی استحکام اور کرنٹ اکانٹ خسارے میں کمی میں بھی معاون ثابت ہوں گی، یہ کامیابی اسپیشل انویسٹمنٹ فیسیلیٹیشن کونسل ،وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی و ٹیلی کام اور نجی شعبے کے درمیان بہترین ورکنگ ریلیشن شپ کی وجہ سے ممکن ہوئی ہے ۔

انہوں نے تجویز دیتے ہوئے کہا کہ آئی ٹی صنعت کے جاری منصوبوں ،پالیسیوں اور اقدامات کو اسی طرز پر جاری رکھنا چاہیے جس سے آئی ٹی کی ایکسپورٹ میں اضافے کا تسلسل جاری رہے ۔زوہیب خان نے بتایا کہ رواں مالی سال کے پہلے 7مہینوں (جولائی 2023تاجنوری2024)کے دوران آئی ٹی انڈسٹری کی برآمدی کارکردگی مختلف مشکلات کے باوجود مستحکم رہی ہے اوراس نے 1.5 بلین ڈالر کے مقابلے میں 1.7 بلین ڈالر کا زرمبادلہ کمایا ہے جو گزشتہ سال کی اسی مدت سے 13فیصد زائد ہے ۔

چیئرمین پاکستان سافٹ وئیر ہائوسز ایسوسی ایشن زوہیب خان نے مطالبہ کیا کہ پاکستان اسٹارٹ اپ فنڈ، ای روزگار سنٹرز،آئی ٹی سیکٹر کی فارن کرنسی میں آمدنی کے 50 فیصد کوفارن کرنسی اکائونٹ میں رکھنے کی اجازت ،آئی ٹی کے  75,000 پیشہ ور افراد کی سرٹیفکیشن کے  منصوبے،فائیو جی سپیکٹرم کو فعال کرنا،ٹیلی کام ٹربیونل کا قیام اور ایس آئی ایف سی کے ذریعے سرمایہ کاری کی سہولت کو وسیع تر قومی مفاد میں جاری رہنا چاہیے۔