کابینہ کمیٹی نے ایران کی سرحد تک گیس پائپ لائن بچھانے کی منظوری دے دی

کابینہ کمیٹی نے ایران کی سرحد تک گیس پائپ لائن بچھانے کی منظوری دے دی
کابینہ کمیٹی نے ایران کی سرحد تک گیس پائپ لائن بچھانے کی منظوری دے دی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)نگران وزیر توانائی کی زیرصدارت اجلاس میں کابینہ کمیٹی نے ایران کی سرحد تک گیس پائپ لائن بچھانے کی منظوری دے دی۔

نگران وفاقی وزیر توانائی محمد علی کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی توانائی کا اجلاس ہوا، ایران سے گیس درآمد کے لیے ایران سرحد تک 80 کلومیٹر پائپ لائن تعمیر کرنے کی منظوری دے دی گئی۔

اعلامیے کے مطابق کابینہ کمیٹی توانائی نے پاکستان کے اندر ایران کی سرحد تک گیس پائپ لائن بچھانے کی منظوری دی، پاکستان کے اندر 80 کلومیٹر گیس پائپ لائن بچھانے کا کام شروع کیا جائے گا، پائپ لائن گوادر سے ایران سرحد تک تعمیر ہوگی۔

کابینہ کمیٹی کے اعلامیے کے مطابق کابینہ کمیٹی نے وزارتی کمیٹی کی سفارشات کی منظوری دی، منصوبہ انٹراسٹیٹ گیس سسٹم کے ذریعے مکمل کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق پائپ لائن بچھانے سے پاکستان 18 ارب ڈالر جرمانے سے بچ جائے گا، ایران سے 750 ملین کیوبک فٹ گیس انتہائی سستی ملےگی ، گیس خریدنے میں پاکستان کو سالانہ 5 ارب ڈالر کی بچت ہوگی۔

ذرائع نے بتایا کہ ایران 18 ارب ڈالر جرمانے کا نوٹس واپس لے گا، گیس لائن کی تعمیر پر 45 ارب روپے لاگت آئے گی، پاکستان امریکا سے آئی پی منصوبے پر پابندیوں سے استثنیٰ مانگے گا۔

مزید :

قومی -