یمن: باغیوں اور حکومت کے درمیان 9نکاتی امن معاہدہ طے پا گیا

یمن: باغیوں اور حکومت کے درمیان 9نکاتی امن معاہدہ طے پا گیا

ثنا( آن لائن )یمن میں حوثی باغیوں اور حکومت کے درمیان 9 نکاتی امن معاہدہ طے پاگیا ہے۔ معاہدے کے تحت باغیوں نے تمام سرکاری عمارتوں سے قبضہ ختم کرنے پر آمادگی ظاہر کی ہے، جس کے جواب میں انہیں آئین میں مجوزہ ترمیم میں کچھ مراعات حاصل ہونگی ، جبکہ حکومت کو یمن کو 6 وفاق حصوں میں تقسیم کرنے کا اختیار مل جائے گا۔معاہدے میں یہ شرط بھی رکھی گئی ہے کہ آئین میں مجوزہ ترمیم پر تمام فریقین کا متفق ہونا لازمی ہوگا اور یمن کو وفاقی ریاست کا درجہ حاصل ہوگا۔معاہدے کے تحت حوثی باغیوں کو سرکاری عہدوں پر بھی تعینات کیا جائے گا۔دو روز قبل دارالحکومت صنعا پر قبضہ کرنے کے بعد حوثی باغیوں نے یمنی صدر اور ان کے عملے کو قصر صدارت میں یرغمال بنالیا تھا۔حوثی باغیوں نے آئین میں ترمیم کے صدر ہادی کے منصوبے کو مسترد کرتے ہوئے انھیں اس اقدام سے باز رہنے کا کہا تھا۔ادھر امریکا نے کہا ہے کہ اس نے یمن کی صورتحال پر نظر رکھی ہوئی ہے۔ محکمہ خارجہ کی ترجمان جین ساکی کا کہنا تھا کہ امریکا منصور ہادی کو ہی یمن کا آئینی صدر تسلیم کرتا ہے اور ان کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہے۔امریکی دفاعی عہدیداروں کے مطابق یمن سے امریکی سفارتی عملے کو بحفاظت نکالنے کے لیے فوج تیار ہے لیکن فی الحال سفارت خانہ بند کرنے کا کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے۔

مزید : عالمی منظر