ایل ڈی اے کا کروڑوں روپے سے قائم‘ ون ونڈ‘ ‘ سنٹر سائلین کو ریلیف دینے میں ناکام

ایل ڈی اے کا کروڑوں روپے سے قائم‘ ون ونڈ‘ ‘ سنٹر سائلین کو ریلیف دینے میں ...

 لاہور(ایم آئی بھٹی)لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا ’’ون ونڈو‘‘ سنٹر لوگوں کو ریلیف دینے میں ناکام ہو گیا۔کروڑوں روپے کی لاگت سے تیارہونیوالا ون ونڈو سٹریکچرعوام کیلئے سہولت کی بجائے زحمت کا باعث بننے لگا۔ایل ڈی اے حکام نے 2010میں عوام کی سہولت کیلئے ’’ون ونڈ و‘‘ کے نام سے عوام کیلئے سہولت گھر بنایا تھا۔جہاں پر سائلین درخواستیں جمع کر ا کر اپنے کام کرواتے ہیں اور حکام کیمطابق ون ونڈو سیل شہریوں کی سہولت کیلئے بنایا گیا تھا تاکہ سائلین ایک ہی جگہ پر درخواستیں جمع کر کے اپنے کام کر وا سکیں لیکن سابق ڈی جی ایل ڈی عمر رسول کے دور میں قائم کیا گیا ونڈو سیل میں عوامی مسائل کا لٹک جانا معمول بن گیا ہے جس سے شہری خوار ہو رہے ہیں جہاں دنوں کا کام مہینوں میں کیا جاتا ہے ۔ون ونڈو میں موجود ایک سائل نے بتایا کہ اپنے پلاٹ کی سالانہ کمرشلائزیشن کیلئے 20دسمبر2014کو درخواست دی تھی جس کی واپسی کی تاریخ 7جنوری 2015دی گئی تھی لیکن چالان ایک سال کی بجائے ایک سال اور 8ماہ کا بنا دیا گیا ہے جو کہ آٹھ ماہ قبل کا بنا دیا گیا ہے جبکہ میں نے پلاٹ کی کمرشلائزیشن ابھی تک شروع نہیں کی اور پلاٹ خالی پڑ اہے۔ایک اور سائل نے بتایا کہ 6ماہ پہلے پلاٹ خرید ا تھا جس کی تمام رپورٹیں اور این او سی لیکر اپنے نام کروایا تھا ۔اب بیچنا چاہتا ہوں تو مجھ سے دوبار این او سی اور دیگر رپورٹیں جمع کروانے کا کہا جارہا ہے۔ان کے علاوہ ون ونڈو میں موجود بیشتر لوگوں کا کہنا تھا کہ جب ونڈو پر درخواست دی جاتی ہے تو مبہم سے جوابات دے کر ٹرخادیا جاتا ہے اور ونڈٖوبند کر دی جاتی ہے جس کے بعد دوبارہ درخواست دینی پڑتی ہے۔اس سلسلہ میں ون ڈنڈو سیل کے ڈائریکٹر فہد انیس کا کہنا تھا کہ میرے آنے سے پہلے کلرک جواب لکھ کر لاتے تھے جبکہ میں نے ڈی جی احد خان چیمہ سے ملاقات کر کے لوگوں کے مسائل کے بارے میں آگاہ کیا جس کے بعد ہر فائل ڈائریکٹر خود پڑھتا ہے اوربعد میں اس کا جواب لکھ کر بھیجا جاتا ہے۔ہر افسرکی خواہش ہوتی ہے کہ عوام کے کام ہوں۔بعض اوقات ٹیکنکل مسائل کیوجہ سے ریونیو سے ریکارڈ مکمل کرانے کی ہدایت کی جاتی ہے۔

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...