بالائی علاقوں میں بارش اور بر فباری کے باعث سڑکیں بند ،مواصلاتی رابطے معطل عوام کو دشواری

بالائی علاقوں میں بارش اور بر فباری کے باعث سڑکیں بند ،مواصلاتی رابطے معطل ...

                    اسلام آباد /گلگت /پشاور/کوئٹہ (آئی این پی )ملک کے بالائی علاقوں اور شمال مغربی بلوچستان میں بارش اور برفباری کا سلسلہ دوسرے روز بھی جاری رہا جس کی وجہ سے سردی کی شدت میں مزید اضافہ ہوگیا ،خیبرپختونخوا میں پہاڑوں نے سفید چادر اوڑھ لی، میدانی علاقوں میں رجم جھم جاری ،کالام، ماندام اور مالم جبہ میں دو روز کے دوران ڈیڑھ فٹ، لواری ٹاپ پر 5 فٹ، لواری ٹنل پر2 فٹ اور شندور روڈ پر ڈیڑھ فٹ برف پڑگئی ، شندور روڈ بند ہونے سے چترال اور گلگت کے درمیان زمینی رابطہ معطل ، چمن، پشین، لورالائی،ژوب اور قلات میں برفباری کا سلسلہ رک گیا،ملکہ کوہسارمری سمیت گلیات کے پہاڑوں پر 6انچ تک برف گرنے سے سردی بڑھ گئی ، برفباری کے باعث درخت گرنے سے بجلی کے تار ٹوٹ گئے،کئی علاقوں میںبجلی کی فراہمی معطل رہی ، ملکہ کوہسار میں ملک بھر سے سیاحوں کی آمد کا سلسلہ جاری، ماہرین موسمیات کا آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران خیبرپختونخوا کے بالائی علاقوں جبکہ بلوچستان کے بعض علاقوں میں بھی کہیں کہیں بارش اور برفباری کا امکان کااظہار۔جمعرات کو ملک کے مغرب سے داخل ہونے والی ہواو¿ں کے باعث بالائی علاقوں میں بارش اور برفباری کا سلسلہ جاری رہا۔خیبرپختونخوا میں پہاڑوں نے سفید چادر اوڑھ لی جبکہ میدانی علاقوں میں رجم جھم جاری رہی۔ کالام، ماندام اور مالم جبہ میں دو روز کے دوران اب تک ڈیڑھ فٹ تک برف پڑ گئی۔ لوئر اور اپر دیر میں برفباری جاری رہی جس کی وجہ سے براول اور کوہستان کا دیگر علاقوں سے مواصلاتی رابطہ منقطع ہوگیا ۔ چترال میں بھی پہاڑوں پر برف پڑ گئی۔ گرم چشمہ، لواری اور بگشت سمیت بالائی علاقوں میں تین روز سے برف روئی کے گالوں کی طرح برستی رہی، اب تک لواری ٹاپ پر 5 فٹ، لواری ٹنل پر2 فٹ اور شندور روڈ پر ڈیڑھ فٹ برف پڑگئی۔ شندور روڈ بند ہونے سے چترال اور گلگت کے درمیان زمینی رابطہ معطل ہوگیا ۔ شمال مغربی بلوچستان کے علاقوں چمن، پشین، لورالائی،ژوب اور قلات میں برفباری کا سلسلہ رک گیا تاہم بعض مقامات پر اب بھی وقفے وقفے سے برفباری جاری رہی۔ملکہ کوہسارمری سمیت گلیات کے پہاڑوں پر 6انچ تک برف گرنے سے سردی بڑھ گئی ۔ نتھیاگلی سے شانگلہ گلی تک سڑکیں بند ہوگئیں۔ مری میں برفباری کے باعث درخت گرنے سے بجلی کے تار ٹوٹ گئے۔ کشمیرپوائنٹ، بینک روڈ،ہال روڈ، جھیگاگلی روڈ ، اپروومنٹ ٹرسٹ،عباسی محلہ اورکشمیری محلہ میں گزشتہ شام5بجے سے بجلی کی فراہمی معطل رہی۔ بجلی کی عدم فراہمی اور راستوں کی بندش جیسے مسائل بھی لوگوں کو اس دلفریب موسم سے لطف اندوز ہونے سے روک نہیں پارہے اور ملکہ کوہسار میں ملک بھر سے سیاحوں کی آمد کا سلسلہ جاری رہا۔ اس کے علاوہ آزاد کشمیر میں کیل، اٹھ مقام، فاروڈکہوٹہ اور دیرکوٹ میں برف روئی کی طرح گر نے لگی۔ جس کی وجہ سے باغ سے بھیڈی اور وادی نیلم جانے والی رابطہ سڑکیں بند ہوگئی ۔محکمہ موسمیات کے مطابق ملک میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سب سے زیادہ سردی پارا چنار میں پڑی جہاں کم سے کم درجہ حرارت منفی 9 ریکارڈ کیا گیا۔ اس کے علاوہ اسکردو اور مری میں منفی8، گوپس اور قلات میں منفی 5، استور میں منفی 4، ہنزہ میں منفی 3 ڈگری اور گلگت میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 2 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔ ماہرین موسمیات نے آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران خیبرپختونخوا کے بالائی علاقوں جبکہ بلوچستان کے بعض علاقوں میں بھی کہیں کہیں بارش اور برفباری کا امکان ظاہرکیا ہے۔ اس کے علاوہ لاہور، راولپنڈی، گوجرانوالہ، فیصل آباد اور ساہیوال ڈویژن میں بارش جبکہ اسلام آباد اور اس کے گرد و نواح میں بارش کے ساتھ ساتھ ہلکی برفباری ہوسکتی ہے۔

 بارش اور برفباری

مزید : صفحہ آخر