ایک ہفتے میں تیسرا بڑا بریک ڈاؤن ، این ڈی ٹی سی کا پورا بورڈ تحلیل ، ایم ڈی بھی فارغ

ایک ہفتے میں تیسرا بڑا بریک ڈاؤن ، این ڈی ٹی سی کا پورا بورڈ تحلیل ، ایم ڈی بھی ...

 کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)ایک ہفتے میں تیسرا بڑا بریک ڈاؤن ہونے سے سندھ کے پانچ اضلاع کو بجلی کی فراہمی معطل ہو گئی، بریک ڈاؤن پر بریک ڈاؤن نے این ڈی ٹی سی کا مستقبل بھی تاریک کر دیا، ایم ڈی سمیت پورا بورڈ تحلیل کر دیا گیا۔ صرف بارہ گھنٹے بعد بجلی کے ایک اور بریک ڈاؤن سے سندھ کے پانچ اضلاع کو بجلی کی فراہمی کئی گھنٹے بند رہی۔ ایک ہفتے کے دوران بجلی کا یہ تیسرا بڑا بریک ڈاؤن تھا۔ سیپکو ذرائع کا کہنا ہے کہ گڈو تھرمل پاور سٹیشن سے سکھر، حیدر آباد گرڈ سٹیشن کیلئے نکلنے والی 132کے وی کی تاریں تیز ہواؤں کے باعث آپس میں ٹکرانے سے ٹوٹ کر دریا میں گر گئیں جبکہ 5 ٹاور بھی ٹیڑھے ہو گئے۔تاریں ٹوٹنے سے سکھر، حیدر آباد، خیر پور، گھوٹکی اور دادو کو بجلی کی فراہمی معطل ہو گئی۔ گزشتہ روز گڈو تھرمل پاور کے ایک یونٹ میں آتشزدگی کے باعث ملک کے مختلف حصوں میں چھ گھنٹے بجلی کا بریک ڈاؤن رہا۔ دوسری جانب بجلی کے مسلسل بڑے بریک ڈاؤنز کے باعث این ٹی ڈی سی کے ایم ڈی چودھری ارشد کو عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے جبکہ وزارت پانی و بجلی کی سفارش پر نیشنل ٹرانسمشن اینڈ ڈسٹری بیوشن بورڈ کو بھی تحلیل کر دیا گیا ہے۔تین ماہ کے لئے این ٹی ڈی سی کا عبوری بورڈ تشکیل دیا گیا ہے، جس میں راشدین قصوری، عبد المالک میمن، آفتاب ندیم اور حماد یونس شامل ہیں۔

مزید : صفحہ اول