پچھلے برس 1435پاکستانی امریکہ میں قانونی طور پر داخل ہو کر غائب ہو گئے

پچھلے برس 1435پاکستانی امریکہ میں قانونی طور پر داخل ہو کر غائب ہو گئے

واشنگٹن (اظہر زمان، بیوروچیف) گزشتہ برس 1435 پاکستانی جو امریکہ میں قانونی طور پر داخل ہوئے تھے وہ اپنے قیام کی مدت پوری ہونے کے بعد واپس جانے کی بجائے غائب ہوگئے۔ ہوم لینڈ سکیورٹی ذرائع نے یکم اکتوبر 2014ء سے 30 ستمبر 2015ء تک کے گزشتہ مالی سال کے عرصے میں امریکہ آنے والے وزیٹر کی تفصیل جاری کی ہے جس کے مطابق ان کی کل تعداد پانچ لاکھ تھی۔ اس عرصے میں پاکستانیوں کے علاوہ جن افراد نے مدت سے زیادہ قیام کیا، ان میں 219 افغانستان، 681 عراق، 564 ایران، 440 شام اور 219 یمن سے تعلق رکھتے تھے۔ اس محکمے پر تنقید ہوئی تھی کہ اس کے امیگریشن نظام میں خلاء ہے جس کی وجہ سے غیر قانونی طور پر ٹھہر جانے والے وزیٹرز کو چیک نہیں کیا جاسکتا۔ ان ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ وفاقی حکومت 99 فیصد غیر قانونی تارکین وطن کی تحقیقات نہیں کرتی۔ صرف وہی افراد پکڑ میں آتے ہیں جو کسی جرم کا ارتکاب کریں۔ سینیٹ کی امیگریشن سب کمیٹی کے چیئرمین جیف اسسٹنٹ ڈائریکٹر کریگ ہیلی سیشنز نے اس سلسلے میں سماعت بھی کی جہاں ہوم لینڈ سکیورٹی کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کریگ ہیلی نے گزشتہ برس ساڑھے چار کروڑ افراد بزنس یا ٹورسٹ ویزا پر امریکہ میں داخل ہوئے جن میں سے تقریباً ایک فیصد افراد جو پانچ لاکھ کے قریب بنتے ہیں، قیام کی مدت سے زائد امریکہ میں رک گئے۔ گزشتہ برس وفاقی حکومت نے صرف اڑھائی ہزار افراد کو ڈی پورٹ کیا۔

مزید : صفحہ آخر