چارسدہ یونیورسٹی پر حملے میں بیرونی ہاتھ ملوث ہے: حافظ سعید

چارسدہ یونیورسٹی پر حملے میں بیرونی ہاتھ ملوث ہے: حافظ سعید

لاہور(نمائندہ خصوصی)امیر جماعۃالدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ سعید نے کہا کہ ملک میں تکفیر اور خارجیت کا فتنہ منظم منصوبہ بندی کے تحت پروان چڑھا جارہاہے۔ چارسدہ یونیورسٹی اور پشاور سکول پر حملہ جیسی دہشت گردی کی کاروائیوں میں بیرونی ہاتھ ملوث ہے۔ کفر کے فتوے لگا کر قتل و غارت گری کے سلسلے ختم کرنا ہوں گے۔ مسلمانوں میں گروہ بندیوں اور فرقہ وارانہ تشدد سے اسلام دشمن قوتیں فائدے اٹھا رہی ہیں۔علماء انبیاء کے وارث ہیں‘ وہ اصلاح کیلئے اپنی ذمہ داریاں ادا کریں۔مسلمان اپنے بچو ں کو انگریزی و دیگر علوم و فنون سکھانے کے ساتھ ساتھ قرآن و سنت کی تعلیم بھی دیں۔مظلوم کشمیریوں کی مددوحمایت کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔ نہتے کشمیریوں کو غاصب بھارت کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جاسکتا۔ وہ مرکز تقویٰ پینسرہ روڈ گوجرہ میں خطبہ جمعہ کے دوران خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر ہزاروں مردوخواتین نے ان کی امامت میں نماز جمعہ ادا کی۔ جماعۃالدعوۃ کی طرف سے سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔ شرکاء کی مکمل جامہ تلاشی کے بعدانہیں پنڈال میں جانے کی اجازت دی گئی۔ جماعۃالدعوۃ کے سربراہ نے اپنے خطاب میں کہاکہ فرقہ واریت سے پیدا ہونے والا تشدد اور اسلام میں پڑنے والی دراڑوں سے دشمن ہماری صفوں میں داخل ہوئے ۔مسلمانوں میں باہمی اتحادویکجہتی کا ماحول ہونا چاہیے اور اس اتحاد کو اپنے ایمان کا حصہ بنانا چاہیے۔مسلم امہ کو متحد ہو کر دشمنان اسلام کی سازشیں ناکام بنانے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہاکہ انگریز نے مسلمانوں میں لادینیت پھیلانے کیلئے بہت کوششیں کی ہیں۔ان کی پروردہ این جی اوز نے ایسے تعلیمی ادارے بنائے جہاں نصابوں سے قرآن پاک اور سیرت رسول ﷺ کو نکال دیا گیاتاکہ یہاں سے پڑھنے والے لوگ ان کیلئے کام کریں۔ضرورت اس امر کی ہے کہ ایسے تعلیمی ادارے بنائے جائیں جہاں سائنس وٹیکنالوجی کے ساتھ ساتھ کتاب و سنت کی بھی تعلیم دی جائے۔ہمیں بچوں کوعلوم و فنون سکھانے کی طرح انہیں اسلامی شریعت بھی پڑھانی چاہیے تاکہ وہ ذہنی طور پر بیرونی قوتوں کے غلام نہ ہوں اورصحیح معنوں میں امت مسلمہ کی خدمت کر سکیں۔

مزید : صفحہ آخر