پتنگ بازی نے پھر سر اٹھا لیا، کاروبار بھی عروج پکڑ نے لگا

پتنگ بازی نے پھر سر اٹھا لیا، کاروبار بھی عروج پکڑ نے لگا

لاہور( خبرنگار) شہر میں پتنگ بازی جیسے جان لیوا کھیل نے ایک مرتبہ پھر سراٹھا لیا ہے۔ پتنگ بازی کے ساتھ پتنگ سازی کے کاروبار نے بھی زور پکڑ لیا ہے۔ جس میں شہر کی گنجان آبادیوں سمیت ارد گرد کے علاقوں شاہدرہ ، لکھوڈیئر، باٹا پور، کاہنہ، چونگی امرسدھو اور سندر سمیت چوہنگ کے علاقہ میں پتنگ سازی کا کاروبار عروج پر پہنچ چکا ہے جس میں بڑے بڑے سائز کی پتنگیں، گڈے اور ممنوعہ سائز کی ڈوریں تیار کی جا رہی ہیں اور اس میں اندر کھاتے مانجے والی ڈور بھی تیار کی جا رہی ہے جس پر شہریوں میں خوف و ہراس پھیل کر رہ گیا ہے۔ دوسری جانب گزشتہ روز اتوار کے دن لاہور کے مختلف علاقوں میں پتنگ بازی کا زور رہا ہے جس میں حکیماں والا بازار سنادہ، سمن آباد اور گجر پورہ، غازی آباد اور شالامار سمیت شاہدرہ میں دن بھر پتنگ بازی کی گئی ہے جس میں پتنگ بازوں نے دن بھر پتنگ بازی کا سلسلہ جاری رکھا ہے۔ اس میں پولیس اورضلعی حکومتوں کی ٹیمیں اس جان لیوا کھیل کی روک تھام میں مکمل طور پر ناکام رہی ہیں۔ جس پرشہریوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ پتنگ بازی جیسے جان لیوا کھیل کی روک تھام کی جائے۔ دوسری جانب پتنگ بازی کی مخالف تنظیموں نے پتنگ بازی اور اس کے سازو و سامان کی تیاری پر شدید ردعمل کااظہار کیا ہے جس میں اینٹی کائٹ فلائنگ ایسوسی ایشن پنجاب کے صدر راؤ محمد اکرم اور پتنگ متاثرین کمیٹی کے چیئرمین شیخ محمد امین قادری اور اکرام اللہ خان کاکڑ نے کہا ہے کہ حکومت نے پتنگ بازی جیسے جان لیواکھیل منانے کے لئے اشارہ دے رکھا ہے اور حکومتی فیصلہ سے قبل ہی پتنگ بازوں نے اپنی مرضی سے پتنگیں اور ڈوریں تیار کروانے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے جو کہ سپریم کورٹ کی جانب سے عائد پابندی کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔ پتنگ بازی سے جانی حادثات بڑھیں گے۔ حکومت اس جان لیوا کھیل کی ہرگز اجازت نہ دے۔ لاہور میں پتنگ بازی کا سلسلہ عروج پر پہنچتے ہی ڈی آئی جی آپریشن ڈاکٹر حیدر اشرف کی جانب سے وائرلیس کے ذریعے پیغامات جاری ہونا شروع ہو گئے ہیں جس میں ایس پیز اور ڈی ایس پیز کو احکامات جاری کئے گئے ہیں کہ پتنگ بازوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے اور اس کے ساتھ ساتھ پتنگ سازی کے دھندے میں ملوث لوگوں کو بھی گرفتار کیاجائے۔ اس سلسلہ میں ہربنس پورہ پولیس نے واڑہ ستار کے علاقہ میں ایک گودام پر چھاپہ مار کر 680 پتنگیں اور 150 چرخیاں کر لی ہیں۔ اس حوالے سے ایس ایچ او ہربنس پورہ صغیر احمد میتلا نے ’’پاکستان‘‘ کو بتایا کہ گودام کے مالک وسیم احمد نے پتنگیں اور ڈوریں فروخت کرنے کا کاروبار شروع کر رکھا تھا۔ ملزم کے خلاف ایس پی کینٹ رانا طاہر کے حکم پر مقدمہ درج کر کے تفتیش کی جا رہی ہے اور جہاں سے ملزم پتنگیں اور ڈوریں تیار کرواتا یا خرید کر گودام میں سٹور کرتا تھا اس شخص کی گرفتاری کے لئے بھی چھاپے مارے جا رہے ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1