قوم ناموس رسالت قانون کی حفاظت کیلئے تیارہے،قاری زواربہادر

قوم ناموس رسالت قانون کی حفاظت کیلئے تیارہے،قاری زواربہادر
قوم ناموس رسالت قانون کی حفاظت کیلئے تیارہے،قاری زواربہادر

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) جمعیت علماء پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ قاری محمد زوار بہادرنے کہا ہے کہ قوم ناموس رسالت کے قانون کی حفاظت کے لئے میدان میں نکلنے کے لئے تیار ہو جائے سیکولر عناصر ایک بار پھراس قانون پر وار کرنا چاہتے ہیں یہ قانون کسی انسان کا بنایا ہوا نہیں بلکہ خود اللہ رب العزت نے اپنے محبوب کی ناموس کی حفاظت کا قانون بنایا ہے غلامان مصطفےٰﷺ اس قانون کو ختم کرنے یا اس میں ترمیم ہر گز برداشت نہیں کریں گے ہم نے پہلے بھی اس کے آگے بند باندھا ہے آئندہ بھی میدان عمل میں ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان جیسے ملک میں کسی کو لادینیت اور اظہار رائے کے نام پر نبی پاکﷺ ،قرآن پاک‘ اسلام اور شعائر اسلام کے خلاف گستاخی اور بے ادبی کی اجازت دی گئی تو ملک میں انارکی پھیل جائے گی اور اس کی ذمہ داری حکومت پر ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ دشمنان اسلام نے وطن عزیز پاکستان میں ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت یہ ناپاک کھیل کھیلنے کی جسارت کررہے ہیں مگر غلامان مصطفےٰﷺ ان منصوبوں کو خاک میں ملا دیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامعہ صفۃ الاسلامیہ فیروز پور روڈ میں علماء کے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں مولانا حافظ نصیر احمد نورانی ،مفتی تصدق حسین، ایم اے مہر،مولانا اعظم قادری ،مولانا غلام مصطفی رضاء القادری،چودھری غلام محمد ،مولانا عطاء الرحمن نقشبندی ،مولانا نذر احمد سعیدی، مولانا شبیر حسین فریدی ،قاری مقصود احمد،مولانا غلام مصطفےٰ نقشبندی کے علاوہ دیگر علماء نے شرکت کی۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے دیگر مقررین نے کہا کہ ملکی حالات تیزی سے ابتری کی طرف جارہے ہیں قادیانیوں کو کھل کھیلنے کی اجازت دی جا رہی ہے چکوال میں مسجد پر با اثر قادیانیوں کے قبضے کے باوجود انتظامیہ کی طرف سے مسلمانوں کے خلاف کاروائیاں کی جا رہی ہیں حکمران اسلامی غیرت وحمیت سے خالی ہوچکے ہیں اور سیکولر جماعتوں سے بھی آگے نکل کر خود کو بڑا سیکولر ثابت کرنے کی کوشش کررہے ہیں انہیں یاد رکھنا چاہیے کہ قوم نے ان کو ناموس رسالت کے قانون میں تبدیلی کا کوئی مینڈیٹ نہیں دیاتھا جو اقتدار تک پہچانا جانتے ہیں وہ گردن میں رسی ڈال کر اتار بھی سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ نے کہا کہ فیس بک پر گستاخانہ مواد ڈال کر اسلامیان پاکستان کی دل آذاری کرنے والوں کے خلاف حکومت فوری کارروائی کرے اور سزا کے خوف سے روپوش ہونے والوں کو اسلامی تعلیمات کے مطابق فوری سزا دی جائے۔

مزید : صفحہ آخر