26جنوری سے 5فروری تک عشرہ کشمیر منانے کا اعلان، مسئلہ کشمیر کے حل تک انڈیا سے تجارت نہیں ہونی چاہیے: حافظ سعید

26جنوری سے 5فروری تک عشرہ کشمیر منانے کا اعلان، مسئلہ کشمیر کے حل تک انڈیا سے ...

لاہور( نمائندہ خصوصی )امیر جماعۃالدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ حکومت پاکستان سی پیک کو آزادی کشمیر کے ساتھ جوڑے اورچین، روس و دیگر ملکوں کے ذریعہ انڈیا پر ریاستی دہشت گردی بند کرنے کیلئے دباؤ بڑھایا جائے۔ کشمیر جل رہا ہے‘ مظلوم مسلمان مدد کیلئے پکار رہے ہیں۔ وزیر اعظم نوازشریف وزراء کے ہمراہ اقوام متحدہ میں دھرنا دیکر بیٹھ جائیں اور کہاجائے کہ جب تک کشمیریوں پر ظلم بند نہیں ہو تا ہم یہاں سے نہیں جائیں گے۔ حکومت کے پاس کوئی مینڈیٹ نہیں کہ وہ کشمیریوں کا خون ہوتا دیکھے۔مسئلہ کشمیر کے حل تک انڈیا سے تجارت نہیں ہونی چاہیے۔سیاسی و مذہبی جماعتیں اور صحافی برادری قائد اعظم کے اصولی موقف پر کاربند رہیں۔26جنوری سے 5فروری تک عشرہ کشمیر منائیں گے۔ 26جنوری کو اسلام آباد میں بڑی اے پی سی جبکہ ضلعی سطح پر جلسوں، کانفرنسوں اور ریلیوں کا انعقاد کیا جائے گا۔سال 2017ء کشمیر کے نام کرتے ہیں۔ان خیالا ت کا اظہارانہوں نے مقامی ہوٹل میں سینئر اخبار نویسوں اور کالم نگاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر جماعۃالدعوۃ کے مرکزی رہنما مولانا امیر حمزہ، ابوالہاشم ربانی اور محمد یحییٰ مجاہد بھی موجود تھے۔ جماعۃالدعوۃ کے سربراہ حافظ محمد سعید نے کہاکہ جدوجہد آزادی کشمیر دنیا کی طویل ترین تاریخ ہے۔ ساڑھے چھ لاکھ سے زائد کشمیری شہید ہو چکے ہیں۔ برہان وانی کی شہادت کے بعد سینکڑوں شہید ہو چکے۔ پیلٹ گن کے چھرے لگنے سے ہزاروں کشمیری زخمی ہوئے۔ ڈیڑھ سو سے زائد افراد کی بینائی چلی گئی۔ ہزاروں افراد کو پی ایس اے قانون کے تحت جیلوں میں ڈال دیا گیاجس میں نوے سالہ بزرگ سے لیکر پانچ سال تک کا بچہ شامل ہے۔مقبوضہ کشمیر میں سکول جلائے گئے اور خواتین سے بداخلاقی کے واقعات ہوئے۔ 65ہزار سے زائد املاک بھارتی فوج نے تباہ کی ہیں۔ جموں میں ہندو انتہاپسند تنظیمیں مسلح مار چ کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انڈیا کشمیر میں کیمیکل ہتھیار استعمال کر رہا ہے لیکن افسوس کہ دنیا میں اس کا شور نہیں ہوا۔ میں اس کے باقاعدہ ثبوت پیش کر سکتا ہوں۔عبدالماجد زرگر شہید ہوا تو پوری کشمیری قوم سڑکوں پر آئی۔ انڈیا کے پروپیگنڈے کو رد کرنے اور کشمیر میں ظلم کے خلاف تحریک کی ضرورت ہے۔کہا جاتا ہے کہ مہاراجہ ہری سنگھ نے کشمیر کا سودا کیا تھا،ان دستاویزات کو پیش کرکے انڈیا نے اٹوٹ انگ کی رٹ لگا کر دنیا کے سامنے پیش کیالیکن حقیقت یہ ہے کہ اقوام متحدہ اور دیگر عالمی اداروں کے سامنے پیش کرنے والی وہ دستاویز ہی جھوٹ پر مبنی ہے۔یہ ساری سازش پٹیل،نہرو،لارڈ ماؤنٹ بیٹن کی تھی۔انہوں نے کہا کہ انڈیا کی بے جی پی،کانگریس،میڈیا سب ایک انداز میں بات کرتے ہیں لیکن پاکستان میں الگ الگ مؤقف نظر آتے ہیں۔پاکستان اور فوج کیخلاف باتیں کی جاتی ہیں۔یہاں بھی ایک موقف ہونا چاہیے۔ صحافی برادی قوم کی تربیت کرنے والی ہے۔کشمیر وطن عزیز پاکستان کی بقا کا مسئلہ ہے۔ اب وقت آگیا ہے کہ انڈیا کے پروپیگنڈے کاپوری قوت سے توڑ کیاجائے۔

مزید : صفحہ آخر