عہدہ سنبھالتے ہی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے دفتر ’اوول آفس‘ میں سب سے پہلے کیا چیز تبدیل کی؟ جان کر آپ کو بھی اس حرکت پر ہنسی آجائے گی

عہدہ سنبھالتے ہی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے دفتر ’اوول آفس‘ میں سب سے ...
عہدہ سنبھالتے ہی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے دفتر ’اوول آفس‘ میں سب سے پہلے کیا چیز تبدیل کی؟ جان کر آپ کو بھی اس حرکت پر ہنسی آجائے گی

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک)اگرچہ ہر امریکی صدر وائٹ ہاﺅس کا مکین ہونے پر اس کی سجاوٹ میں اپنی مرضی کے مطابق کچھ تبدیلیاں کرتا ہے لیکن ڈونلڈ ٹرمپ اس معاملے میں بھی بہت جلدباز نکلے ہیں۔ جس طرح انہوں نے حلف اٹھاتے ہی کئی احکامات صادر فرما دیئے اسی طرح عہدہ سنبھالنے کے گھنٹوں بعد ہی وائٹ ہاﺅس کی سجاوٹ بھی اپنی مرضی سے کروا ڈالی۔ میل آن لائن کی رپورٹ ڈونلڈ ٹرمپ نے اوول آفس میں باراک اوباما کی پسند کے پردے ہٹا کر اپنی پسند کے چمکیلے سنہری رنگ کے پردے لگوا دیئے ہیں۔ باراک اوباما نے گہرے سرخ رنگ کے پردے لگوا رکھے تھے۔ اس کے علاوہ ٹرمپ نے اوول آفس کے صوفے بھی تبدیل کروا دیئے ہیں۔ ڈونلڈ ٹرمپ کو سنہری رنگ بہت پسند ہے اور ان کے ٹرمپ ٹاور کی اندرونی سجاوٹ میں بھی سنہرا رنگ نمایاں ہے۔ چنانچہ انہوں نے اپنے اوول آفس کی سجاوٹ میں بھی اسی رنگ کو نمایاں کر دیا ہے۔

ٹرمپ نے خواتین کیخلاف جو باتیں کی ہیں وہ ناقابل قبول،اپنی بات کہنے سے نہیں ڈروں گی:برطانوی وزیر اعظم تھریسامے

رپورٹ کے مطابق ونسٹن چرچل اور مارٹن لوتھر کنگ جونیئر کے چہرے کے مجسمے اوول آفس میں کی زینت ہوا کرتے تھے جو بوجوہ وہاں سے ہٹا کر وائٹ ہاﺅس کے ایک اور کمرے میں رکھ دیئے گئے تھے۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے آتے ہیں یہ دونوں مجسمے بھی واپس اوول آفس میں سجا دیئے ہیں۔اس کے علاوہ انہوں نے اوول آفس کا قالین ہٹا کر وہاں صدر بش کے دور کا قالین بچھوا دیا ہے۔ یہاں یہ سوال بھی اٹھتا ہے کہ باراک اوباما نے وائٹ ہاﺅس میں جو سجاوٹی تبدیلیاں کی تھیں ان کا خرچ انہوں نے اپنی جیب سے ادا کیا تھا، کیا ڈونلڈ ٹرمپ بھی اپنی کی گئی تبدیلیوں پر اٹھنے والی رقم خود ادا کریں گے؟ امریکی کانگریس صدر اور اس کے خاندان کے لیے1لاکھ ڈالر(تقریباً 1کروڑ روپے) مختص کرتی ہے جو وہ اپنی 4سالہ مدت میں اپنی مرضی کے مطابق خرچ کر سکتے ہیں۔

امریکہ کا صدر بننے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کی پہلی سنگین غلطی جس نے دنیا میں ان کا تماشہ بنا دیا

دوسری طرف خاتون اول میلانیا ٹرمپ بھی وائٹ ہاﺅس کے رہائشی ایریا کی سجاوٹ میں تبدیلیوں کے لیے وائٹ ہاﺅس کی سجاوٹ کرنے والے ڈیزائنرز سے ملاقات کر چکی ہیں اور انہیں ہدایات دے چکی ہیں لیکن وہ کم از کم 6مہینے تک نیویارک میں ہی اپنے بیٹوں کے ساتھ مقیم رہیں گی اور اس کے بعد وائٹ ہاﺅس منتقل ہوں گی۔ 132کمروں پر مشتمل وائٹ ہاﺅس کے زیادہ تر حصے میں تبدیلیوں کا اختیار صدر اور اس کے خاندان کے پاس ہوتا ہے تاہم کچھ کمرے ایسے ہیں جن میں وہ کوئی تبدیلی نہیں کر سکتے۔ ان کمروں میں صدر لنکن کا بیڈروم، گرین روم اور سٹیٹ ڈائننگ روم شامل ہیں۔

مزید : بین الاقوامی