’جب میں 3 سال کا تھا تو آسمان سے یہ چیز مجھ پر گری اور مجھے مافوق الفطرت طاقتیں دے گئی، یہ آسمانی بجلی نہ تھی بلکہ۔۔۔‘

’جب میں 3 سال کا تھا تو آسمان سے یہ چیز مجھ پر گری اور مجھے مافوق الفطرت ...
’جب میں 3 سال کا تھا تو آسمان سے یہ چیز مجھ پر گری اور مجھے مافوق الفطرت طاقتیں دے گئی، یہ آسمانی بجلی نہ تھی بلکہ۔۔۔‘

  

تل ابیب(مانیٹرنگ ڈیسک) اسرائیل کے شعبدہ باز اوری گیلر کے نام سے ایک دنیا واقف ہے۔ اس نے تمام عمر حیران کن ’جادوئی‘ کرتب دکھا کر لاکھوں لوگوں کو اپنا مداح بنایا۔اس نے اپنی آپ بیتی میں اپنی مافوق الفطرت صلاحیتوں کے بارے میں ایسا حیران کن انکشاف کر دیا ہے کہ آپ سن کر دنگ رہ جائیں گے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق اوری گیلر نے لکھا ہے کہ ”جب میں تین سال کا تھا تو میرا خلائی مخلوق سے سامنا ہوگیا۔ ایک انتہائی روشن اڑن طشتری میرے سر کے اوپر آ کر منڈلانے لگی اور پھر اس سے ایک انتہائی تیز ، نظر کو چندھیا دینے والی روشنی مجھ پر پھینکی گئی۔ اس سے میرے اندر یہ مافوق الفطرت طاقت آ گئی۔“

پاکستان کا وہ انوکھا ترین مزار جیسا دنیا میں کوئی اور نہیں، یہ کس نے بنایا اور اندر کیا ہے؟ جان کر ہر مسلک کے ہر مسلمان کو بے حد فخر ہوگا

رپورٹ کے مطابق اوری گیلر کے ساتھ پیش آنے والے اس واقعے کا ایک عینی شاہد بھی ہے، جس کا نام یعقوب ابراہیمی ہے جو اسرائیلی ایئرفورس کا ریٹائرڈ کیپٹن ہے۔2007ءتک اوری اپنے ساتھ پیش آنے والے اس وقت کو محض نظر کا دھوکہ سمجھتا تھا۔اس نے ایک پروگرام میں اپنے ساتھ پیش آنے والے اس واقعے کا ذکر کیا جس کے بعد یعقوب ابراہیمی نے اس سے رابطہ کرکے بتایا کہ وہ اس واقعے کا عینی شاہد ہے۔ یعقوب ابراہیمی نے اسے بتایا کہ ”1949ءمیں کرسمس کے دن میں ایک عمارت میں کھڑا تھا کہ میں نے آسمان میں روشنی کی ایک گیند سی دیکھی۔اس دوران ایک دوسری عمارت سے ایک بچہ نکلا جس نے سفید شرٹ اور سیاہ ٹراﺅزر پہن رکھا تھا۔ جونہی وہ بچہ سڑک پر آیا روشنی کی وہ گیند اس کے سر کے اوپر آئی اور اس سے ایک تیز روشنی نکل کر بچے پر پڑنے لگی۔ بچہ واپس عمارت کی طرف دوڑنے لگا اور روشنی اس کا پیچھا کرنے لگی۔ پھر وہ بچہ عمارت میں داخل ہو گیا اور روشنی ختم ہو گئی۔اوری گیلر نے یعقوب کی بتائی گئی جگہ اور حالات سن کر بتایا کہ واقعی وہ بچہ اوری تھا۔ اس گواہی کے بعد اسے یقین ہو گیا کہ وہ واقعہ محض اس کا خیالی دھوکہ نہیں بلکہ حقیقت تھی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس