تاریخ کا انوکھا ترین مقدمہ، جج نے نجومی کو جسم فروش خاتون کو 9کروڑ روپے ادا کرنے کا حکم دے دیا کیونکہ۔۔۔

تاریخ کا انوکھا ترین مقدمہ، جج نے نجومی کو جسم فروش خاتون کو 9کروڑ روپے ادا ...
تاریخ کا انوکھا ترین مقدمہ، جج نے نجومی کو جسم فروش خاتون کو 9کروڑ روپے ادا کرنے کا حکم دے دیا کیونکہ۔۔۔

  

ٹوکیو (نیوز ڈیسک) کاہن اور نجومی لوگوں کو قسمت کا حال تو بتاتے ہیں لیکن جاپان کی ایک خاتون نجومی نے کمال شیطنیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک پریشان حال خاتون کے دماغ پر قابو پا کر اسے جسم فروشی پر لگا دیا۔ دماغ کنٹرول کر کے جسم فروشی کروانے کا یہ انوکھا جرم بالآخر قانون کی نظر میں آیا تو شرمناک جرم کا ارتکاب کرنے والی کاہنہ کو عدالت میں پیش کر دیا گیا۔ عدالت کی جانب سے بدھ کے روز مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے کاہنہ کو حکم دیا گیا کہ وہ متاثرہ خاتون کا دماغ کنٹرول کرنے کے جرم میں اسے ایک کروڑ یوان (تقریباً 9 کروڑ پاکستانی روپے) بطور ہرجانہ ادا کرے۔

وہ شہر جہاں رہنے والی 70 فیصد نوجوان لڑکیاں زندہ رہنے کیلئے جسم فروشی پر مجبور ہیں

ویب سائٹ ٹوکیو رپورٹر کے مطابق ٹوکیو ڈسٹرکٹ کورٹ کے جج سومارو تومورو نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ کاہنہ نے ایک سادہ لوح خاتون کی سوچوں کو کنٹرول کرکے اسے جنسی دھندے پر لگادیا اور مختلف حیلوں بہانوں سے 10کروڑ یووان بھی ہتھیالئے۔ عدالت نے کاہنہ کے مضحکہ خیز دلائل کو بھی رد کردیا جن میں کہا گیا تھا کہ متاثرہ خاتون پیسہ سنبھالنا اور ڈھنگ سے استعمال کرنا نہیں جانتی تھی اور عجیب و غریب حرکات کرتی تھی، جیسا کہ بعض اوقات کھانے بیٹھتی تو 14 افراد کے برابر کھانا کھاجاتی۔ عدالت نے یہ ماننے سے بھی انکار کر دیا کہ متاثرہ خاتون کے ذمے قسمت کا حال جاننے کی مد میں 10 کروڑ یووان کی رقم واجب الادا تھی۔

عدالت کو بتایا گیا تھا کہ متاثرہ خاتون نے کاہنہ سے پہلی بار 2008ءمیں اس وقت رابطہ کیا جب وہ اپنی طلاق کے بعد ذہنی پریشانی سے دوچار تھی۔ بعدازاں وہ اکثر فون پر اس سے رابطہ کرنے لگی اور پھر 2011ءمیں ٹوکیو کے علاقے مناتو وارڈ میں واقع اس کے فلیٹ میں منتقل ہوگئی۔ کچھ ہی عرصے بعد اس نے کاہنہ کے زیر اثر ایک قریبی قحبہ خانے پر کام کرنا شروع کردیا۔ شاطر کاہنہ اسے نفسیاتی حربوں سے یہ باور کروانے میں کامیاب ہوگئی کہ اس کے اردگرد ہونے والے تمام مسائل کا تعلق اس کی ماضی کی غلطیوں سے تھا۔ وہ اسے ان مصائب سے باہر آنے کے لئے اپنے احکام کی تعمیل پر مجبور کرتی رہی اور اس سے جسم فروشی کا دھندہ بھی کرواتی رہی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس