ہمارے دادا کی جائیداد تینوں بھائیوں میں برابرتقسیم ہوئی،کسی کو کوئی اختلاف نہیں،کرپشن کو گالی سمجھتے ہیں،پانامہ کیس میں وزیر اعظم سرخرو ہوں گے:سلیمان شہباز

ہمارے دادا کی جائیداد تینوں بھائیوں میں برابرتقسیم ہوئی،کسی کو کوئی اختلاف ...
ہمارے دادا کی جائیداد تینوں بھائیوں میں برابرتقسیم ہوئی،کسی کو کوئی اختلاف نہیں،کرپشن کو گالی سمجھتے ہیں،پانامہ کیس میں وزیر اعظم سرخرو ہوں گے:سلیمان شہباز

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعلیٰ شہباز شریف کے صاحبزادے سلیمان شہباز نے کہا ہے کہ ہمارے دادا میاں شریف کی جائیداد تینوں بھائیوں میں ایک معاہدے کے تحت برابر برابرتقسیم ہوئی،کسی کو کوئی اختلاف نہیں ہے،ہم کرپشن کو گالی سمجھتے ہیں،پانامہ کیس میں وزیر اعظم سرخرو ہوں گے۔

وزیر اعلیٰ شہباز شریف کے بیٹے سلیمان شہباز نے پروگرام ”آج شاہ زیب خانزادہ کے ساتھ“میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعظم کے خلاف کرائسس تو اسی دن سے شروع گئے جب انہوں نے حلف اٹھایا تھا یہ کوئی نئی بات نہیں ہے،ہر چھ ماہ بعد نیا بحران پیدا کردیا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ اثاثہ جات میں کچھ بھی نہیں چھپایا گیا ہے،پانامہ کیس میں وزیر اعظم کی فیملی دفاع کررہی ہے،روزانہ میڈیا اور عدالت میں ٹرائل ہورہا ہے،ہر سوال کا جواب دے رہے،اپنا پوائنٹ آف ویو بھی دے رہے ہیں،اگر یہ احتساب ہے تو وزیراعظم نواز شریف کا اس سے بڑا احتساب مشرف دور میں ہوچکا ہے،اس میں سرخرو ہوئے تھے اس میں بھی سرخرو ٹھہریں گے۔

جس نے جو برا بھلا کہنا تھا کہہ دیا لوگ انتظار کریں، اگر کسی نے غلط بیانی کی ہے تو ہم نے قانون کے مطابق طے کرنا ہے: سپریم کورٹ میں پاناما کیس کی سماعت کل تک ملتوی

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا ہے کہ مجھے وزیر اعظم پر  یقین ہے وہ بے قصور ہیں،ہمارے خاندان میں کوئی اختلاف نہیں ہے،ہمارے خاندان کے اثاثوں کی تقسیم 2007ءمیں جدہ سعودی عرب میں ہوئی ہے،کوئی پوشیدہ چیز نہیں ہے تینوں بھائیو ں میں اثاثوں کی تقسیم باقاعدہ معاہدے کے تحت ہوئی ہے،جس کا ثبوت ہے،کسی نے فیکٹری لی تو کسی نے اراضی لے لی تھی،اگر آگے کسی نے اثاثے بنائے ہیں تو اپنے اپنے حصوں سے بنائے ہیں،ریاست کا ایک روپیہ بھی باہر نہیں گیا ہے،ہمارے خاندان کو اپنے کزنز کے اثاثوں پر کوئی اعتراض نہیں ہے اور ان کو بھی نہیں ہے'،پاکستان کو لوٹ کر اثاثے نہیں بنائے گئے ہیں ،کورٹ میں جواب دے رہے ہیں فیصلہ بھی آجائے گا،جب پاکستان کوئی پیسہ نہیں گیا تو منی ٹریل کس بات کا۔

ایک اور سوال میں کہا ہے کہ ہمارے خاندان کی ذاتی زندگی کو میڈیا پر اچھالا جاتا ہے،جب اتفاق فاﺅنڈری کو قومیا گیا تو ہمیں تو پوچھا تک نہیں گیا، نواز شریف تو کالج دور سے محنت کررہے ہیں،وزیر اعظم کا شہباز شریف کے خاندان کی طرف سے دفاع نہ کرنے کی خبریں غلط ہیں، میں نے جیو پر سب سے پہلے وزیر اعظم کا دفاع کیا ہے،یہ ایشو بہت پرانا ہے۔

اس کیس میں دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوگا،وزیر اعظم سرخرو ہوں گے،ہم کسی کو چھپنے نہیں دیں گے سب کا کچا چٹھا نکالیں گئے،بنی گالہ گفٹ ہوتو گفٹ ہے اور کوئی بیٹا باپ کو گفٹ دے تو شور مچایا جاتا ہے، یہاں ڈبل سٹینڈرڈز ہیں،عمران خان کی پارٹی کو فارن فنڈنگ ہورہی ہے،جہانگیر ترین کی آف شور کمپنیاں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ تہمینہ درانی کی کسی ٹوئیٹ کا جواب دینا پسند نہیں کرتا ،ہم بڑوں کی قدر کرتے ہیں،توفیق کیس کے ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا ہے جب اس پر کوئی سیٹل منٹ ہوئی تو اس کا مجھے علم نہیں ہے اور میاں نواز شریف اس وقت لانڈھی جیل میں تھے-

پانامہ کیس، وزیر اعظم نواز شریف خود اپنے ہی بیانات کے گرداب میں پھنس گئے :سراج الحق

انہوں نے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب نے ایک پیسہ کی کرپشن نہیں کی ہے،ہم کرپشن کو گالی سمجھتے ہیں،چینی صدرشی چن پنگ کرپشن کے خلاف کلین اپ کررہے تو سی پیک پر بھی وہ ایسا برداشت نہیں کریں گے۔

مزید : قومی /اہم خبریں