زنیب قتل کیس ،بداخلاقی کے مقدمات میں رہائی پانیوالے 3310قیدیوں کے ڈی این اے ٹیسٹ کروانے کا فیصلہ

زنیب قتل کیس ،بداخلاقی کے مقدمات میں رہائی پانیوالے 3310قیدیوں کے ڈی این اے ...

لاہور (کرائم رپورٹر، خبر نگار)جے آئی ٹی نے زنیب قتل کیس میں ملوث ملزم تک رسائی حاصل کرنے کیلئے لاہو ر کی دو جیلوں اور قصور جیل سمیت پنجاب کی پانچ جیلوں بداخلاقی کے مقدمات میں رہائی پانیوالے 3310قیدیوں کے ڈی این اے ٹیسٹ کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلہ میں جے آئی ٹی کے سربراہ نے آئی جی جیل خانہ جات سے رہائی پانے والے قیدیوں کا ریکارڈ حاصل کرلیاہے جس میں متعلقہ اضلاع کے ڈی پی اوز کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ رہائی پانے والے قیدیوں کے ڈی این اے ٹیسٹ کروائیں ۔ ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ گزشتہ روز جے آئی ٹی کے سربراہ نے آئی جی جیل خانہ جات سے ملاقات کرنے کے بعد ان سے سال 2014سے 2107کے دوران پنجاب کی پانچ جیلوں سینٹرل جیل لاہو ر، کیمپ جیل لاہور ، قصور جیل ، شیخوپورہ اور اوکاڑہ جیل سے بداخلاقی کے مقدمات میں رہائی پانے والے 3310قیدیوں کا ریکارڈ حاصل کیا گیا ہے اور حاصل کئے گئے ریکارڈ کے بعد اس بات کا فیصلہ کیا گیا ہے کہ رہائی پانے والے ان قیدیوں کے ڈی این اے ٹیسٹ کروائے جائیں تاکہ قصور میں قتل ہونے والی زینب کے قاتل تک پہنچا جا سکے ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اس حوالے جے آئی ٹی کے سربراہ کی جانب سے متعلقہ اضلاع کے ڈی پی اوز کو بھی احکامات جاری کر دئیے گئے ہیں اورانہیں حکم دیا گیا ہے کہ جیلوں سے بچوں سے مبینہ بداخلاقی کے مقدما ت میں رہائی پانے والے افراد کو طلب کرکے ان کے ڈی این اے ٹیسٹ جلد از جلد کروائے جائیں ۔

ڈی این اے

مزید : صفحہ اول