شریف خاندان کالے کرتوتوں کی پردہ پوشی کیلئے اداروں پر الزام لگا رہا ہے، مونس الٰہی

شریف خاندان کالے کرتوتوں کی پردہ پوشی کیلئے اداروں پر الزام لگا رہا ہے، مونس ...

لاہو(جنرل رپورٹر) شہباز شریف کی نیب لاہور کے دفتر میں طلبی اور اس کے بعد ان کی پریس کانفرنس پر اظہار خیال کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ ق کے مرکزی رہنما مونس الٰہی نے کہا ہے کہ اگر نیب اور عدلیہ شہباز شریف یا ان کے نااہل بڑے بھائی کو طلب کریں تووہ فوراً بدنیتی اور انتقام کی رٹ لگانا شروع کردیتے ہیں جب ان کے سیاسی مخالفین کو بلایا جائے تو وہ اسے احتساب قرار دیتے ہیں، شریف خاندان تضادات کا ایسا مجموعہ ہے جو اپنے کالے کرتوتوں کی ناکام پردہ پوشی کیلئے اداروں پر الزام تراشی کر رہا ہے۔ نیب نے شہباز شریف کولاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی اور پنجاب لینڈ ڈویلپمنٹ کمپنی میں ہونے والے آشیانہ ہاؤسنگ سکیم کے نام پر اربوں روپے کے فراڈ کی تحقیقات کیلئے طلب کیا تھا جس میں ان پر الزام ہے کہ انہوں نے آشیانہ اقبال کی تعمیر کا ٹھیکہ کامیاب بولی دینے والی کمپنی چودھری لطیف اینڈ سنز سے لیکر بطور وزیراعلیٰ پنجاب اپنی من پسند لاہور کاسا ڈویلپرز کو دے دیا جس کا وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق سے تعلق بتایا جاتا ہے، اپنے اس عمل سے انہوں نے خزانے کو 905 ملین روپے کا نقصان پہنچایا۔ نیب آشیانہ اقبال کی کنسلٹنسی کا انجینئرنگ کنسلٹنسی سروسز پنجاب نامی کمپنی کو کنٹریکٹ دینے کی بھی تحقیقات کر رہی ہے جسے یہ معاہدہ 192 ملین میں دیا گیا جبکہ نیسپاک نے اسی کام کیلئے 35 ملین کی پیشکش کی تھی۔ شہباز شریف کو نیب نے چائے کی دعوت پر کلین چٹ دینے کیلئے نہیں بلکہ غریبوں کے نام پر قائم کی گئی آشیانہ سکیم میں اربو ں روپے کے فراڈ کی تحقیقات کیلئے بلایا تھا۔ اداروں پر بدنیتی کا الزام لگانے والے غریبوں کے نام پر قائم کئے گئے آشیانہ منصوبہ میں خود سنگین بدنیتی کے مرتکب ہیں۔

مزید : صفحہ آخر