کسی کو کرپشن کرنے کی اجازت نہیں دی جائیگی ،عبداللہ

کسی کو کرپشن کرنے کی اجازت نہیں دی جائیگی ،عبداللہ

مٹہ (رحیم خان) تحصیل ناظم مٹہ عبداللہ خان نے کہا ہے کہ نہ پہلے کرپشن کی ہے اور نہ کسی کو کرنے دینگے انہوں نے کہا کہ مجھ اور کونسل پر الزام لگانے والے عدالت میں ثبوت دیں یا کونسل اکر ایوان میں ثبوت پیش کریں اگر ایک پائی کا بھی کرپشن ثابت ہوا تو ایک لمحہ بھی تحصیل ناظم نہیں رہونگا انہوں نے کہا کہ تحصیل کونسل میں تو کیا اگر کسی کی پاس ثبوت ہو تو صوبائی وزیر محمود خان کے اربوں کی ترقیاتی کاموں میں بھی کرپشن ثابت کریں تحصیل کونسل مٹہ میں تمام کام اور ملازمتیں قانونی تقاضوں کو پوری کرکے ہوئی ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز کونسل کے اجلاس جو سپیکر محمد حکیم کے زیر صدارت منعقد ہو اتھا سے خطاب کرتے ہوئے کیا اجلاس سے سپیکر محمد حکیم نئے ٹی ایم او یاسر محمد نے بھی خطاب کی عبداللہ خان نے کہا کہ کونسل پر الزام لگانا ایک احمقانہ قدم ہے کیونکہ اگر انہوں نے یا کسی نے اور نے غیر قانونی کام یا غیر قانونی بھرتیاں کی ہے تو عدالت جائے اور ثبوت پیش کریں انہوں نے کہا کہ ایک بار الیکشن کمیشن میں دائر کی گئی مقدمے میں ناکامی بعد اب من گھڑت اور بے بنیاد پروپیگنڈے سمجھ سے بالاتر ہے انہوں نے کہا کہ جنازگاہوں میں کرپشن کی الزام لگانے والوں نے عوام سے وعدے کی اور ان وعدوں میں ناکام ہونے کی بعد وہ ان جنازگاہوں کونشانہ بناتے ہیں انہوں نے کہا کہ ترقی یہاں کی عوام کی مقدر ہے اور تحصیل کونسل مٹہ اپوزیشن کو لیکر یہ کام کرینگے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے حکومتی اراکین فضل ربی محمد رحیم گوہر علی اور جاوید علی نے بھی تحصیل کونسلر ڈاکٹر امجد علی کے طرف تحصیل ناظم اور کونسل کی بارے میں الزامات کی پریس کانفرنس پر کڑی تنقید کی اور اس کام کو اخلاق سے گرے ہوئے کام قرار دی اور خوب دل کی بڑاس نکال دی اجلاس میں فضل ربی اور دیگر ممبران نے پہاڑی علاقوں میں شاملات کی بارے میں عوام کیساتھ ملکر تعاون کرنے کی بھی بات کی گئی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے عادل خان ایڈوکیٹ نے کہا کہ ڈاکٹر امجد علی کے طرف لگائے الزامات کی بارے کمیٹی بنائے جائے اور تحقیقات کی بعد ذمہ داروں کو سزا دینا چایئے تاکہ ائندہ کیلئے دوبارہ کوئی یہ کام نہ کریں دریں اثنا گذشتہ روز کی اجلاس میں اجلاس ایجنڈا سے لیکر اخری وقت تک ڈاکٹر امجد علی کے طرف سے پریس کانفرنس اور الزامات پر خوب بحث کی گئی یاد رہے کہ تحصیل کونسلر ڈاکٹر امجد علی جس پر پوری اجلاس میں خوب بحث ہوئی وہ اجلاس میں شریک نہیں تھادریں اثنا کونسل میں اپوزیشن لیڈر کے قیادت میں اپوزیشن ممبران پر مشتمل ایک کمیٹی بھی بنائی گئی جو ڈاکٹر امجد علی کے حالیہ پریس کانفرنس پر تحقیقات کریگی اجلاس میں حکومتی اراکین نے تحصیل کونسل کے ممبر ڈاکٹر امجد علی کے خلاف ایک قراداد بھی منظور کی

مزید : پشاورصفحہ آخر