قانون کی بالادستی اولیت ترجیح ہے ،ڈی پی او کوہاٹ

قانون کی بالادستی اولیت ترجیح ہے ،ڈی پی او کوہاٹ

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) کوہاٹ کے ضلعی پولیس سربراہ عباس مجید خان مروت نے کہا ہے کہ قانون و انصاف کی بالا دستی کیلئے پولیس اور بار کا باہمی لائیزون بے حد ناگزیر ہے۔عدالتوں میں مقدمات کو کامیابی سے ہمکنار کرنے اور مظلوم کی داد رسی کیلئے وکلاء برادری کا کردار ہمیشہ سے مسلمہ رہا ہے۔عدلیہ کے وقار کو بلند رکھنے کیلئے ہمیں مشترکہ ذمہ داریوں کا تعین کرنا ہوگا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کوہاٹ ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کی دعوت پرضلعی بار روم میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تقریب میں ڈی ایس پی سٹی رضا محمد،ڈی ایس پی لیگل اسحاق گل،ڈسٹرکٹ بارایسوسی ایشن کے صدر جاویدمحمد پنجی ایڈووکیٹ،ممبر صوبائی بار کونسل فواد حسین ایڈووکیٹ، سابق صدر بار ایسوسی ایشن عماد اعظم ایڈووکیٹ،شعیب محمد ایڈووکیٹ،فیض محمدخان ایڈووکیٹ،طارق خٹک ایڈووکیٹ، امان بنگش ایڈووکیٹ،ملک حمید خان ایڈووکیٹ اور دیگر ممتاز قانون دانوں اور بار ایسوسی ایشن کے عہدیداروں کے علاوہ وکلاء برادری نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔تقریب کے دوران وکلاء برادری نے شہر کی ٹریفک نظام میں مثبت تبدیلی پیدا کرنے،موٹر سائیکل کی ون ویلنگ اور شہر میں پیشہ ور بھکاریوں کے خلاف کاروائی عمل میں لانے، ٹریفک کے بڑھتے ہوئے رش پر کنٹرول حاصل کرنے کی خاطر تمام گاڑیوں کو رجسٹریشن وروٹ پرمٹ کے قانونی دائرے میں لانے اور عدالتوں میں زیر سماعت مقدمات میں پولیس ریکارڈ کی بروقت فراہمی میں وکلاء برادری کیساتھ تعاون یقینی بنانے کے حوالے سے تجاویز پیش کئے۔تقریب کے دوران وکلاء برادری کی طرف سے سامنے آنیوالی تجاویز پر فوری عملدارآمد یقینی بنانے کے سلسلے میں اپنی بھر پور دلچسپی کا اظہار کرتے ہوئے ضلعی پولیس سربراہ عباس مجید خان مروت نے کہا کہ ٹریفک مسائل کے مؤثر حل کیلئے ٹریفک منیجمنٹ اور ٹریفک انجنئیرنگ پر خصوصی توجہ مرکوز کرتے ہوئے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں اور اس سلسلے میں عسکری و سول انتظامیہ اور ضلعی حکومت کیساتھ ملکر مشترکہ اقدامات کی خاطر لائحہ عمل طے کیا جارہا ہے۔ڈی پی او نے دو ٹوک الفاظ میں واضح کردیا کہ موٹر سائیکل کی ون ویلنگ،ہیلمٹ کے بغیر موٹر سائیکل چلانے اور کمسن ڈرائیوروں کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لانے کیلئے پولیس کو ہدایات جاری کردئیے گئے ہیں جبکہ شہر میں پیشہ ور بھکاریوں کی حوصلہ شکنی کیلئے مؤثر اقدمات عمل میں لائے جائیں گے۔ضلعی پولیس سربراہ کا کہنا تھا کہ پولیس کیساتھ وابستہ عدالتی امور کو بالواسطہ طور پر نمٹانے کیلئے ڈی ایف سی عہدے تک کے تمام متعلقہ پولیس افسران کوانکی ذمہ داریوں کی رو سے جاب ڈسکرپشنز جاری کردئیے گئے ہیں ۔ضلعی پولیس سربراہ عباس مجید خان مروت نے ڈسٹرکٹ بار کے وکلاء پر زور دیا کہ وہ عدالتوں میں زیر سماعت فوجداری و دیوانی مقدمات کو کامیابی سے ہمکنار کرنے اور ظالم کا ہاتھ روک کر مظلوم کی دادرسی کیلئے اپنا کردار ادا کریں۔انہوں نے کہا کہ عدلیہ کے وقار کو بلند رکھنے اور قانون وانصاف کی بالا دستی کو یقینی بنانے کیلئے ہمیں اپنی ذمہ داریوں کا تعین کرکے مربوط تعلقات کو فروغ دینا ہوگااور اپنی تابندہ روایات کو برقرار رکھتے ہوئے اخلاقیات اور باہمی اتحاد کے ذریعے مہذب معاشرے کی تشکیل میں اپنا حصہ ڈالنا ہوگا تاکہ مملکت خداداد میں قانون وانصاف کا بول بالا ہو۔

مزید : پشاورصفحہ آخر